تاجروں کے جائزمطالبات تسلیم‘ ایف بی آر کی وضاحت

تاجروں کے جائزمطالبات تسلیم‘ ایف بی آر کی وضاحت

  



ملتان (نیوز رپورٹر) فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے جاری کردہ بیان میں وضاحت کی ہے کہ تاجروں کے جائز مطالبات کو تسلیم کرتے ہوئے ٹیکس ترمیمی ا?رڈنینس (بقیہ نمبر9صفحہ12پر)

کے ذریعے قوانین میں درستگی کر دی گئی ہے اب جبکہ شنا ختی کارڈ کی شرط ہر فروخت پر قانونی شکل اختیا ر کر گئی ہے جس کی وجہ سے تاجران جائز مطالبہ کر رہے تھے کہ ان پر عائد کم از کم ٹیکس کی شرح میں کمی لائی جائے کیونکہ بہت سے ٹیکس گزارکم از کم ٹیکس کی زیادہ شرح کی وجہ سے اپنی فروخت کے درست اعدادو شمار دینے سے گریز کیا کرتے تھے۔ فروخت کے درست اعدادوشمار کے رحجان کو تقویت دینے کے لئے ٹیکس کی کم سے کم شرح کو قابل قبول بنایا گیا ہے۔ اسی طرح تجارتی آسانی کے فروغ کے لئے درمیا نے درجہ کے تاجران کو ودہولڈنگ ایجنٹ کی ذمہ داریوں سے مبرا کر دیا گیا ہے۔ تاجر تنظیموں نے یقین دہانی کروائی ہے کہ درمیانے اور بڑے ریٹیلرز کو انکم ٹیکس میں رجسٹرڈ کروایا جائے گا اس ضمن میں تاجر تنظیموں نے اپنے نمائندگان بھی نامزد کردیئے ہیں تاکہ کم ٹیکس دینے والے کاروبار کا ٹرن اوور کا جائزہ لیا جاسکے تاجر تنظیموں نے آڈٹ تنازعات کے حل کے لیئے ایف بی آر سے مکمل تعاون کی بھی یقین دہانی کرائی ہے ایف بی آر تاجروں کے تعاون سے ٹیکس نظام میں بہتری لانا چاہتا ہے ایف بی آر کے ان اقدامات کی بدولت معاشی سرگرمیاں متاثر کیئے بغیر ٹیکس اہداف کے حصول میں مد ملے گی اور معیشت کو دستاویزی بنانے کے مقصد کو بھی حاصل کیا جاسکے گا۔

تسلیم

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...