بلیک میلنگ‘ گرلز ایلیمنٹری‘ پرائمری سکولوں کے نگران آفیسر ہٹانے کا حکم

بلیک میلنگ‘ گرلز ایلیمنٹری‘ پرائمری سکولوں کے نگران آفیسر ہٹانے کا حکم

  



ملتان (سٹاف رپورٹر) ہراسمنٹ اور بلیک میلنگ کی بڑھتی ہوئی شکایات کے پیش نظرگرلز ایلمنٹری و پرائمری سکولز پر نگران اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز (اے ای اوز)کو ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا۔ بتایا گیا ہے یہ ملتان سمیت صوبہ پنجاب میں بیشتر گرلز ایلمنٹری و پرائمری سکولز پر مرد اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز تعینات ہیں‘ اس سلسلے میں جنسی ہراسمنٹ کی شکایات میں اضافہ ہو گیا۔یہ شکایات عام ہیں کہ اے ای اوز گرلز سکولز میں جا کر بیٹھے رہتے تھے اور کارکردگی کی چیکنگ‘ مانیٹرنگ و نگرانی کی آڑ میں (بقیہ نمبر32صفحہ12پر)

معلمات کے ساتھ گپ شپ میں مصروف رہتے ہیں۔ مختلف مرد اے ای اوزپرہیڈ ٹیچرز اور معلمات کے ساتھ دوستی کی خواہش کرنے اور انکار پر انتقامی کارروائیاں کرنے کے الزامات سامنے آئے‘ اس پر اعلی ٰ حکام محکمہ کی بدنامی کے پیش نظر واقعات کو دبانے کی کوشش کرتے رہے۔ اب پنجاب اسمبلی میں ایک ایم پی اے کی طرف سے قرارداد پیش کئے جانے پر صوبے کے تمام گرلز سکولز پر مسلط مرد اے ای اوز کو ہٹانے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ تعلیمی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ اس نوٹیفکیشن پر فوری طور پر عملدرآمد کیاجائے کیونکہ اس سے پہلے شہباز شریف کے دور حکومت میں بھی گرلز سکولز پر مسلط مرد اے ای اوز کو ہٹاکر خواتین ا ے ای اوز کو تعینات کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا مگر اس پر عملدرآمد نہیں ہو سکا تھا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...