وہ لمحہ جب آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی خوفناک آگ بجھانے والے خوشی سے ناچنے لگے

وہ لمحہ جب آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی خوفناک آگ بجھانے والے خوشی سے ناچنے لگے
وہ لمحہ جب آسٹریلیا کے جنگلوں میں لگی خوفناک آگ بجھانے والے خوشی سے ناچنے لگے

  



سڈنی(ڈیلی پاکستان آن لائن)آسٹریلیا کے کئی مربع کلومیٹر تک پھیلی خوفناک آگ اب تک دودرجن انسانوں اور کروڑوں جانوروں کو جلا کر خاکستر کرچکی ہے،فائر فائٹرز آگ پر قابو پانے کیلئے کئی دنوں سے بھرپور کوششیں کررہے ہیں تاہم اچانک وہاں برسنے والی بارش نے فائر فائٹرز میں نیا جوش و ولولہ پیدا کردیا۔جیسے ہی بارش کی بوندیں پڑیں سخت مشقت سے نڈھال اورجانی و مالی نقصان پر افسردہ فائرفائٹرز بے اختیار خوشی سے ناچنے اور جھومنے لگے۔

واضح رہے آسٹریلیا کے جنگلات میں لگی آگ نے بڑے پیمانے پر خوفناک تباہی پھیلائی ہے۔۔ یونیورسٹی آف سڈنی کے ماہرین ماحولیات کا کہنا ہے کہ اب تک اندازاً 48کروڑ ممالیہ جانور، پرندے اور رینگنے والے جانور ہلاک ہوچکے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ صرف چند دن کے دوران اس آگ سے چوبیس افراد ہلاک جبکہ کئی لاپتہ ہوگئے ہیں۔آسٹریلیا کے مشرقی ساحل کے ساتھ موجود بے شمار گھر تباہ ہوگئے جس کی وجہ سے ہزاروں افراد بے گھر ہوگئے ہیں۔یاد رہے کہ اس وقت بھی نیو ساوتھ ویلز اور وکٹوریا میں 200 سے زائد مقامات پر اگ لگی ہوئی ہے۔

علاوہ ازیں روزنامہ جنگ کے مطابق آسٹریلیا کے جنگلات میں لگی خوفناک آگ کے خاتمے کیلئے مسلمانوں نے خصوصی عبادت کی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق جنوبی آسٹریلیا کے شہر ایڈیلیڈ کے پارک میں مسلمانوں نے نماز استسقاءادا کی۔پارک میں ہونے والی اس خصوصی عبادت میں مسیحی افراد نے بھی شرکت کی اور جنگلات میں لگی آگ کے خاتمے کیلئے بارش کی دعا بھی کی۔واضح رہے کہ آسٹریلیا میں آگ اور دھوئیں کے باعث اب تک اموات کی تعداد 24 ہوگئی جبکہ لاکھوں ایکڑ اراضی جل کر خاک ہوچکی ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...