اگر امریکہ نے ایران پرحملہ کیا تو کس انداز میں حملہ آور ہوگا ؟ دفاعی تجزیہ کار اعجاز اعوان نے وضاحت کردی

اگر امریکہ نے ایران پرحملہ کیا تو کس انداز میں حملہ آور ہوگا ؟ دفاعی تجزیہ ...
اگر امریکہ نے ایران پرحملہ کیا تو کس انداز میں حملہ آور ہوگا ؟ دفاعی تجزیہ کار اعجاز اعوان نے وضاحت کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)دفاعی تجزیہ کار میجر جنرل اعجاز اعوان نے کہا ہے کہ امریکہ اپنے فوجی ایران میں نہیں بھیجے گا بلکہ وہ ایئر اٹیک کرے گا اورامریکہ نے ایران میں اپنے اہداف نشانے پر رکھے ہوئے ہیں۔

اے آروائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے میجر جنرل (ر)اعجاز اعوان نے کہا کہ شام والی صورتحال ایران میں نہیں ہوگی کیونکہ شام میں روس درمیان میں آگیا تھا اوران نے دھمکی دی تھی کہ اگر امریکہ نے شام پر فضائی حملے نہ روکے تو وہ براہ راست سعودی عرب کو نشانہ بنائے گا۔انہوں نے کہاکہ اگر روس نے ایران کے معاملے پر شام والی پوزیشن لی تو اس وقت تک امریکی ایران کا ایئر ڈیفنس تباہ کرچکے ہیں۔امریکہ ایران میں رجیم کی تبدیلی چاہتاہے اور اس وقت تو ایران کے اندر سے رجیم کی تبدیلی کی آوازیں بلند ہورہی ہوں گی۔

میجر جنرل (ر)اعجاز اعوان کا کہنا تھا کہ امریکہ اپنے فوجی ایران میں نہیں بھیجے گا بلکہ وہ ایئر اٹیک کرے گا اورامریکہ نے ایران میں اپنے اہداف نشانے پر رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں ایک پروپیگنڈہ چل رہاہے جیسے ہم اپنے ایئر بیس امریکہ کودیں گے تو امریکہ کو ہمارے ایئر بیسز کی بالکل بھی ضرورت نہیں ہے ، وہ مشرق وسطی میں بہت مضبوطی سے بیٹھا ہوا ہے ۔

مزید : قومی