فٹبال ورلڈ کپ ‘ایرانی خواتین تماشائیوں کے لباس پر اعتراض

فٹبال ورلڈ کپ ‘ایرانی خواتین تماشائیوں کے لباس پر اعتراض

  

تہران(آن لائن) برازیل میں جاری فٹبال ورلڈ کپ کے دوران ایرانی خواتین تماشائیوں کے لباس پر بعض حلقوں کی جانب سے سخت اعتراض سامنے آیا ہے۔ اس مناسبت سے تماشائیوں اور کھلاڑیوں کو مغربی لباس سے دور رکھنے اور انہیں شرعی لباس کا پابند بنانے کے لیے ایک منفرد فیشن شو کا اہتمام کیا گیا۔ جس میں ماڈلز کو ایرانی پرچم کے رنگوں سے ڈیزائن کردہ شرعی اسپورٹس کٹ میں کیٹ واک بھی کرائی گئی۔ رپورٹ کے مطابق فیشن کی نمائش میں پیش کردہ لباس کے ڈیزائن میں مختلف ایرانی لوگو بھی شامل ہیں۔ شو کی منتظم مریم مویدی کا کہنا تھا کہ فٹبال کپ کے حوالے سے شرعی لباس ڈیزائن کرنے میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا لیکن اس سے زیادہ مشکل اس لباس کی نمائش تھی، کیونکہ حکومت سے بہ مشکل تمام اس کی اجازت حاصل کی گئی۔

 تاہم یہ ایک کامیاب نمائش تھی جسے اندرون اور بیرون ملک ایرانی شہریوں کی جانب سے داد تحسین پیش کی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ ان کی تنظیم نے فٹ بال کپ کی مناسبت سے خواتین کے لیے چار مختلف نمونوں کے ملبوسات ڈیزائن کیے ہیں۔ خواتین کھلاڑیوں کے یونیفارم کی شکل میں ڈیزائن کردہ لباس میں ایرانی پرچم، قومی تہذیب و ثقافت کے اظہار کے مختلف دیگر سلوگن اور چیتے کی شکل بنائی گئی تھی۔ دوسرے عہدیدار نے کہا کہ انہیں توقع ہے کہ ایشیائی فٹ بال کپ کے دوران بھی ان کے تیار کردہ خواتین تماشائیوں کے مخصوص لباس کو غیر معمولی پذیرائی ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ اسپورٹس کے حوالے سے تیار کردہ مخصوص ملبوسات سے حاصل ہونے والی رقم قومی فٹ بال ٹیم کی مدد پر صرف کی جائے گی۔   

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -