ٹورنامی سافٹ ویئر استعمال کرنے والوں کی جاسوسی

ٹورنامی سافٹ ویئر استعمال کرنے والوں کی جاسوسی

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) امریکہ کی طرف سے دنیا بھر کے لوگوں کی جاسوسی نے عام شہریوں کو بھی خوف میں مبتلا کررکھا ہے لیکن اب اس بات کا انکشاف ہوگیا ہے کہ امریکی خفیہ ایجنسیاں کن لوگوں کی جاسوسی کرتی ہیں۔ امریکی ادارے نیشنل سیکیورٹی ایجنسی (NSA) کا کہنا ہے کہ انٹرنیٹ پر ٹور (Tor) نامی سافٹ ویئر استعمال کرنے والوں اور اس کے بارے میں معلومات حاصل کرنے والے لوگوں کی خصوصی اور تفصیلی جاسوسی کی جاتی ہے۔ اسی طرح ٹیلز (Tails) اور اس سے ملتے جلتے سافٹ ویئر کی معلومات لینے والوں کو بھی خصوصی جاسوسی کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ Tor ایک ایسا سافٹ ویئر ہے کہ جو USB پر انسٹال ہوتا ہے جسے کمپیوٹر کے ساتھ لگا کر انٹرنیٹ استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ سافٹ ویئر صارف کی انٹرنیٹ پر تمام سرگرمیوں کو خفیہ رکھتا ہے اور یہ پتا چلانا ممکن نہیں ہوتا کہ کون کون سی ویب سائٹس دیکھی گئیں اور انٹرنیٹ پر کیا معلومات سرچ کی گئیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ چونکہ Tor اور Tails جیسے سافٹ ویئر لوگوں کو خفیہ طور پر انٹرنیٹ استعمال کرنے میں مدد دیتے ہیں اور یہ ظاہر کرتے ہیں کہ انہیں استعمال کرنے والے ٹیکنالوجی کا زیادہ علم رکھتے ہیں۔ اس لئے امریکی خفیہ ایجنسیاں انہیں استعمال کرنے والوں یا ان کے بارے میں معلومات سرچ کرنے والوں کی سخت جاسوسی اور نگرانی شروع کردیتی ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -