ڈاکٹروں نے آدھے دن کے طویل آپریشن کے بعد کٹاہواہاتھ جوڑدیا

ڈاکٹروں نے آدھے دن کے طویل آپریشن کے بعد کٹاہواہاتھ جوڑدیا
ڈاکٹروں نے آدھے دن کے طویل آپریشن کے بعد کٹاہواہاتھ جوڑدیا

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) چلڈرن ہسپتال کے پلاسٹک سرجنز نے 12 گھنٹے کا طویل آپریشن کر کے 5 سالہ بچی کا کٹا ہوا بایاں ہاتھ دوبارہ جوڑ دیا۔ تفصیلات کے مطابق ننکانہ صاحب کی سندس کا ہاتھ ٹوکے میں آنے کے باعث کٹ گیا جس کے والدین نے چلڈرن ہسپتال کی انتظامیہ سے رابطہ کیاجہاں اہل خانہ کو پلاسٹک سرجنز ڈاکٹر راﺅ اسلم نے ہاتھ محفوظ رکھنے کیلئے طریقہ سے آگاہ کرتے ہوئے جلد ازجلد بچی کو ہسپتال منتقل کرنے کی ہدایت کردی ۔سات گھنٹے بعد بچی کے ہسپتال پہنچنے پر ڈاکٹر راﺅ اسلم اور ڈاکٹر عمران جعفری نے 12 گھنٹے کا کامیاب آپریشن کرتے ہوئے اسکا ہاتھ دوبارہ جوڑ دیا۔ اس حوالے سے ڈاکٹر راﺅ اسلم نے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ ہاتھ یا پاﺅں کٹنے کی صورت میں 6 گھنٹے کے اندر اندر آپریشن ضروری ہوتا ہے لیکن اگر ہاتھ کو جار میں رکھ کر اور جار کے ارد گرد برف لگا کر اسے محفوظ کر لیا جائے تو یہ کٹا ہوا اعضا 12 سے 24 گھنٹے کے اندر بھی دوبارہ لگایا جاسکتا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -