دوران پرواز پائلٹوں کی آپس میں لڑائی، شدید اختلافات

دوران پرواز پائلٹوں کی آپس میں لڑائی، شدید اختلافات
دوران پرواز پائلٹوں کی آپس میں لڑائی، شدید اختلافات
کیپشن: Piolots

  

پرتھ (نیوز ڈیسک) پرواز میں 13منٹ تاخیر ہونے پر پائلٹ نے غصے میں آکر اپنے جونیئر ساتھی (شریک پائلٹ) کو کاک پٹ سے باہر نکال کر دروازہ اندر سے مقفل (لاک) کر لیا۔ یہ ڈرامائی واقعہ پرتھ اور آکلینڈ کے درمیان اڑنے والے نیوزی لینڈ کے ایک جہاز میں پیش آیا۔ مقامی میڈیا کے مطابق منشیات استعمال کرنے کے شبہ پر شریک پائلٹ کو طبی معائنہ کی ہدایات دی گئیں، جس کی وجہ سے جہاز کو اڑنے میں 13منٹ تاخیر ہوگئی۔ این زیڈ 176 طیارے میں اس وقت 303مسافر سوار تھے، جب پائلٹ نے اس تاخیر پر غصہ کرتے ہوئے جونیئر ساتھی کو کاک پٹ سے باہر نکال کر اندر سے تالہ لگا لیا۔ مقامی میڈیا کا مزید کہنا ہے کہ چوں کہ مذکورہ پائلٹ وقت کی پابندی کے حوالے سے بہترین کارکردگی کا ریکارڈ رکھتا ہے، لہذا اس اس تاخیر پر وہ آپے سے باہر ہوگیا، کیوں کہ اس کے گزشتہ ریکارڈ پر یہ دھبہ تھا۔ کاک پٹ سے باہر شریک پائلٹ نے تین بار کیپٹن سے دروازہ کھولنے کی استدعا کی لیکن اسے مسترد کر دیا گیا، مجبوراً جونیئر افسر کو خفیہ دروازے سے اندر داخل ہونا پڑا۔ تاہم اس ضمن میں نیوزی لینڈ ائیر میں سیفٹی مینجر کے طور پر کام کرنے والے ایرول برٹینشاہ کا کہنا ہے کہ پائلٹ نے غلط فہمی کے باعث ایسا کیا، پائلٹ کے خیال میں دوسرا شخص شریک پائلٹ نہیں بلکہ کیبن کا عملہ ہے، جو کاک پٹ میں داخل ہونے کی کوشش کر رہا ہے۔ تاہم دونوں پائلٹوں کو سزا کے طور پر چند روز کے لئے فلائٹ سے ہٹا دیا گیا ہے، جس دوران کیپٹن دوہفتوں جبکہ شریک پائلٹ ایک ہفتہ کے لئے دوبارہ تربیت اور مشاورت کے مرحلہ سے گزریں گے۔ کاک پٹ میں چلنے والے اس ڈرامہ نے لوگوں کے دل میں خوف بھی پیدا کر دیا کیوں کہ وہ ملائیشیا کے لاپتہ طیارے سے آگاہ تھے۔ ایوی ایشن کمانڈر پیٹر کلارک کا کہنا ہے کہ کاک پٹ میں بیٹھے افراد میں سے کسی ایک کو بھی مختصرترین وقت کے لئے بھی باہر نہیں جانا چاہیے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -