جدہ میں امریکی قونصل خانے پر حملہ کرنے والا پاکستانی تھا :سعودی وزارت داخلہ

جدہ میں امریکی قونصل خانے پر حملہ کرنے والا پاکستانی تھا :سعودی وزارت داخلہ
جدہ میں امریکی قونصل خانے پر حملہ کرنے والا پاکستانی تھا :سعودی وزارت داخلہ

  

جدہ(آن لائن+مانٹیرنگ ڈیسک) سعودی عرب کے شہر جدہ میں امریکی قونصل خانے پر حملہ کرنے والے خودکْش بمبار کی شناخت ہوگئی۔سعودی وزارت داخلہ کے مطابق امریکی قونصل خانے کے قریب خود کو اڑانے والا خود کش بمبار پاکستانی تھا، جس کی شناخت عبداللہ گلزار خان کے نام سے کی گئی۔سعودی وزارت داخلہ نے ٹوئٹر پر حملہ آور کی تصویر بھی جاری کر دی۔وزارت داخلہ کے مطابق 35 سالہ عبداللہ گلزار خان 12 سال سے اپنی اہلیہ اور والدین کے ہمراہ جدہ میں مقیم تھا اور پیشے کے لحاظ سے ڈرائیور تھا۔اس کے علاوہ سعودی حکام نے مسجد نبوی کے قریب کئے گئے دھماکے کے خودکش حملہ آور کی شناخت 18 سالہ سعودی شہری عمرعبدالہادی عمر جعید العتیبی کے نام سے کی ہے، سعودی حکام کا کہنا ہے کہ عمرعبدالہادی مطلوب دہشت گرد تھا۔ ادھر سعودی عرب میں تعینا ت پا کستا نی سفیر منظور الحق نے کہا ہے کہ سعودی عرب میں کسی بھی قسم کے پرتشدد واقعات میں ملوث کسی بھی شخص سے پاکستان کا کوئی تعلق نہیں، ان کا کہنا تھا کہ پا کستا نی ار ض مقد س کو اپنی جا ن سے زیا دہ عزیز سمجھتے ہیں ، امر یکی قونصل خا نے میں پا کستا نی شہر ی کے ملو ث ہو نے کا دعوی درست نہیں ، دشمن قو تیں دونو ں مما لک کے تعلقات خرا ب کر نا چا ہتی ہیں ، انہو ں نے کہا کہ پاکستان ہر طرح کی دہشت گردی کی مذمت کرتاہے۔

سعودی وزارت داخلہ

اسلام آ باد(آئی این پی+مانٹیرنگ ڈیسک) ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے کہا ہے کہ دہشت گردی میں پاکستانی شہری گلزار خان کے ملوث ہونے کی خبر پر سعودی حکومت سے رابط کر کے مبینہ حملہ آور کی تفصیلات مانگی ہیں‘ معاملے پر پاکستانی سفارتخانے سے بھی رابطہ کیا ہے ‘ دہشت گردی کا کسی ملک یا مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہوتا ۔ منگل کو جاری اپنے بیان میں ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان سعودی عرب دھماکوں کی پر زور مذمت کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دھماکوں میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر بے حد افسو س ہے۔ انہوں نے کہاکہ زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے پوری پاکستانی قوم دعا گو ہے۔ انہوں نے کہاکہ سمندر پار پاکستانی سعودی عرب کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب میں ہونے والے دھماکوں میں پاکستانی شہری کے ملوث ہونے بارے اطلاعات پر وزیر خارجہ نے سعودی حکومت سے رابطہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے سعودی حکومت سے مبینہ حملہ آور کے حوالے سے تفصیلات مانگی ہیں۔ نفیس ذکریا نے کہا کہ پاکستانی سفارتخانے سے بھی مسلسل رابطے میں ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ دہشت گردی کا کسی ملک یا مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہوتا۔

مزید : صفحہ اول