عراق، افغانستان اور شام کے بعد امریکہ نے ایک اور بڑے ملک کو حملے کی دھمکی دے دی، ایک اور بڑی جنگ چھیڑنے کی تیاریاں مکمل

عراق، افغانستان اور شام کے بعد امریکہ نے ایک اور بڑے ملک کو حملے کی دھمکی دے ...
عراق، افغانستان اور شام کے بعد امریکہ نے ایک اور بڑے ملک کو حملے کی دھمکی دے دی، ایک اور بڑی جنگ چھیڑنے کی تیاریاں مکمل

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی کوریا کی جانب سے میزائلوں اور ایٹمی ہتھیاروں کی تیاری کا سلسلہ تو ایک عرصے سے جاری تھا لیکن اس کے حالیہ بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربے کے بعد امریکہ کا صبر جواب دے گیا ہے اور اس نے خبردار کردیا ہے کہ شمالی کوریا کا وقت ختم ہوگیا ہے اور اب کسی بھی وقت اس پر حملہ ہوسکتا ہے۔

ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق امریکی حکام کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا نے مسئلے کے سفارتی حل کی گنجائش تقریباً ختم کردی ہے اور اب پیچھے صرف فوجی حل ہی رہ گیا ہے، جس کی جانب امریکہ کسی بھی وقت جاسکتا ہے۔ شمالی کوریا کے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربے کے بعد اقوام متحدہ کا ہنگامی اجلاس منعقد کیا گیا ہے جس میں صدر کم جونگ ان کو جنگ کے خطرے سے خبردار کیا گیا ہے۔

’یہ اُن امریکیوں کیلئے تحفہ ہے جو۔۔۔‘ شمالی کوریا کے سربراہ نے نئے میزائل کے تجربے کے ساتھ ہی امریکیوں کو ایسی گالی نکال دی جس کی دنیا میں کوئی مثال نہیں ملتی، جان کر آپ کے بھی گال شرم سے لال ہوجائیں گے

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے اقوام متحدہ میں امریکہ کی مستقل مندوب نکی ہیلی کا کہنا تھا کہ امریکہ شمالی کوریا کے خلاف طاقت کے استعمال کیلئے تیار ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ امریکہ اپنے اتحادیوں کا دفاع کرنا جانتا ہے اور شمالی کوریا کے جنگی جنون کا جواب دینے کو پوری طرح تیار ہے ۔

دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کا نیا میزائل امریکہ کے مشرقی ساحل سے لے کر ریاست الاسکا تک ما ر کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ یہ میزائل ایٹمی ہتھیارلیجانے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ امریکہ نے اسے اپنے لئے انتہائی درجے کا خطرہ قرار دیتے ہوئے شمالی کوریا کو جنگ کیلئے تیار ہوجانے کی دھمکی دے ڈالی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -