عدالتی فیصلے یا ضمانت منسوخی پر کسی کو بھی گرفتارکرسکتے ہیں، نیب

عدالتی فیصلے یا ضمانت منسوخی پر کسی کو بھی گرفتارکرسکتے ہیں، نیب

  

اسلام آباد (صباح نیوز) قومی احتساب بیورو نے کہا ہے کہ 25 جولائی تک انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کو گرفتار نہ کرنے کا فیصلہ درست ہے۔ عدالتی فیصلے یا ضمانت کی منسوخی پر کسی کو گرفتار کیا جا سکتا ہے۔ نجی ٹی وی کے مطابق نیب نے گزشتہ روز اپنی وضاحت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیب نے اپنے قانون کے متعلق جو بھی فیصلہ کیا ہے وہ بالکل درست اور قانونی فیصلہ ہے۔ نیب کا ایس او پی ہے جس کے مطابق یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ دو ماہ میں شکایت اور چار ماہ میں تفتیش کرنا نیب قانون ہے۔ عدالتی فیصلے یا ضمانت منسوخی پر کسی کو بھی گرفتار کیا جا سکتا ہے۔ نیب کا کسی سیاسی جماعت یا انتخاب سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ دو روز قبل شہباز شریف کو طلب کیا تھا اور 10 جولائی کو عبدالعلیم خان کو بھی طلب کیا گیا ہے اس لئے انکوائری اور انوسٹی گیشن کا سلسلہ جاری رہے گا۔ نیب نے اپنے قانون اور ایس او پی کے مطابق گذشتہ روز فیصلہ کیا ہے اور کسی سیاسی جماعت کا اعتراض نیب کی صورت قبول نہیں کر سکتی نیب کا اپنا ایک قانون ہے اور ایس او پی ہے جس کے مطابق نیب نے فیصلہ کیا کہ 25 جولائی تک کسی بھی انتخاب لڑنے والے امیدوار کو گرفتار نہیں کیا جائے گا۔

مزید :

علاقائی -