کسی ملزم کی غیر موجودگی میں عدالت ، قانون کے سیکشن 366 کے تحت اس کے وکیل کے سامنے سزا سنا سکتی ہے

کسی ملزم کی غیر موجودگی میں عدالت ، قانون کے سیکشن 366 کے تحت اس کے وکیل کے ...

  

لاہور(نامہ نگار ) سابق وزیراعظم نوازشریف کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مؤخر کرنے کے لئے دائر درخواست کے حوالے سے آئینی و قانونی ماہراظہر صدیق ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ قانون کے سیکشن 366 کے تحت اگر کوئی ملزم عدالت میں پیش نہیں ہوتا تو اس کی غیر موجودگی میں ان کے وکیل کے سامنے عدالت سزا سنا سکتی ہے ،بعدازاں نیب آرڈیننس 32کے تحت ملزم10دن کے اندر اندر فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرسکتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ان کے خیال میں ایون فیلڈ ریفرنس میں میاں محمد نوازشریف ودیگر ملزمان اگر کسی وجہ سے (جو وہ بیان کررہے ہیں ) نہیں آسکتے تو وہ ویڈیولنک کے ذریعے عدالت کا فیصلہ سن سکتے ہیں۔واضح رہے کہ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ محفوظ کررکھا ہے جسے سنائے جانے کی عدالت نے آج 6 جولائی کی تاریخ مقرر کی ہے جب کہ نوازشریف نے احتساب عدالت میں اپنے وکیل خواجہ حارث کے معاون وکیل ظافر خان کی وساطت سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مؤخر کرنے کے لئے باضابطہ درخواست دائر کردی ہے۔

مزید :

علاقائی -