ایوان فلیڈ ریفرنس، نواز شریف اور مریم کی فیصلہ مؤخر کرنے کی درخواستیں آج سماعت کیلئے مقرر

ایوان فلیڈ ریفرنس، نواز شریف اور مریم کی فیصلہ مؤخر کرنے کی درخواستیں آج ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) مسلم لیگ(ن) کے تاحیات قائد میاں نوازشریف اور مریم نواز کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مؤخر کرنے کیلئے دائر درخواستوں کو آج سماعت کیلئے مقرر کردیا گیا۔تفصیلات کے مطابق نواز شریف اور مریم نواز کے وکلا نے احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواستیں دائر کی۔درخواستوں میں کلثوم نواز کی بیماری کے باعث لندن میں موجودگی کو وجہ بنایا گیا۔درخواستوں کے ساتھ کلثوم نواز کی میڈیکل رپورٹ بھی لگائی گئی ہے جس کے مطابق کلثوم نواز کو مزید کارڈیک سپورٹ کی ضرورت نہیں رہی لہٰذاآئندہ 48گھنٹوں میں انہیں ہوش میں لانے کی کوشش کی جائے گی۔اس تمام مرحلے کے دوران ان کی فیملی کی مستقل موجودگی اور ساتھ ان کیلئے سود مند ہو گا۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی عدم موجودگی کی صورت میں ڈیوٹی جج ارشد ملک نے کیس کی سماعت کی۔جج ارشد ملک نے ریمارکس دیے کہ یہ مقدمہ احتساب عدالت نمبر ون میں چل رہا ہے لہٰذادرخواست پر سماعت احتساب عدالت نمبر ون کے جج محمد بشیر کریں گے۔بعد ازاں عدالت نے کیس آج سماعت کیلئے مقرر کرتے ہوئے دونوں درخواستیں پراسیکیوٹر نیب کے حوالے کر دیں اور نیب کو نوٹس بھی جاری کر دئیے۔نجی ٹی وی کے مطابق نوازشریف نے درخواست میں مؤقف اپنایا ہے کہ وہ ایون فیلڈ ریفرنس میں ٹرائل کا حصہ رہے ہیں اور مسلسل عدالت آتے رہے لیکن اچانک صورتحال تبدیل ہوئی اور ان کی اہلیہ کلثوم نواز کی طبیعت شدید خراب ہوگئی۔درخواست میں کہا گیا کہ جب سنا کہ احتساب عدالت ایون فیلڈ ریفرنس فیصلہ سنانے جارہی ہے تو پاکستان جانے کیلئے ڈاکٹرز سے مشورہ کیا، ڈاکٹرز نے کلثوم نواز کی طبیعت میں بہتری تک نہ جانے کا مشورہ دیا ۔درخواست میں استدعا کی گئی کہ مجبوری کے باعث 6 جولائی کو پاکستان نہیں آسکتے اور جیسے ہی اہلیہ کی طبیعت بہتر ہوگی پاکستان آئیں گے لہٰذا کچھ دن کیلئے فیصلہ مؤخر کیا جائے۔

ایون فیلڈ ریفرنس

اسلام آباد(آئی این پی)احتساب عدالت ایون فیلڈریفرنس کا فیصلہ آج سنائے گی ،سابق وزیراعظم نوازشریف اور مریم نواز بیرون ملک ہونے کی وجہ سے عدالت نہیں آسکیں گے جبکہ حسین اور حسن نواز اس کیس میں پہلے ہی اشتہاری قرار دیے جا چکے ہیں تاہم کیپٹن (ر) صفدر عدالت آئیں گے، احتساب عدالت کی سکیورٹی کیلئے خصوصی پلان مرتب کر لیا گیا ہے ، پولیس کی معاونت کیلئے رینجرز اور انسداد دہشت گردی کمانڈوز تعینات کئے جائیں گے ۔سیاسی کارکنوں کو جوڈیشل کمپلیکس کی طرف جانے کی اجازت نہیں ہوگی تاہم صرف ان لوگوں کو کمرہ عدالت میں جانے کی اجازت دی جائے گی جن کے نام رجسٹرار کی طرف سے جاری فہرست میں درج کرائے جائیں گے ۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کی طرف سے خواجہ حارث ایڈووکیٹ جبکہ مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی طرف سے امجد پرویز عدالت میں پیش ہوں گے ، نیب کی پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی اور ڈپٹی پراسیکیوٹر افضل قریشی عدالت میں موجود ہوں گے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -