چیف جسٹس کے بھاشا اور مہمند ڈیم بنانے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں:اسفند یار ولی

چیف جسٹس کے بھاشا اور مہمند ڈیم بنانے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں:اسفند یار ...

  

چارسدہ (بیورو رپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ ۔ چیف جسٹس کے بھا شا اور مہمند ڈیم بنانے کے اعلان کا خیر مقدم کر تے ہیں۔ چیف جسٹس کے چندہ مہم میں اپنے بساط کے مطابق چندہ ڈالینگے ۔ مہمند اور بھا شا ڈیم کا مطالبہ اے این پی کا دیرینہ مطالبہ تھا۔تحریک انصاف اس وقت تحریک سیاسی مہاجرین بن چکی ہے ۔ کپتان کے ساتھ دیگر جماعتوں کے شامل ہونے والوں کو لوٹے کہنا لوٹے کی بے عزتی ہے ۔ بنوں میں عمران خان کا استقبال گندے ٹماٹروں سے کیا گیا ۔ کراچی میں لوگوں نے ان کے خلا ف بلے اٹھائے ۔ وہ عمر زئی میں انتخابی جلسہ سے خطاب کر رہے تھے ۔ اس موقع پر پی کے 58کے امید وار شکیل بشیر خان عمر زئی اور پارٹی کے دیگر ذمہ داران بھی موجود تھے ۔ جلسہ سے خطاب کر تے ہوئے اسفندیار ولی خان نے کہا کہ کہ بد قسمتی یہ ہے کہ ہر پانچ سال بعد مولانا فضل الرحمان اور سراج الحق کو اسلام یاد آتا ہے مگر حکومت میں شامل ہونے کے بعد وہ اسلام بھول جاتے ہیں ۔ مولانا فضل الرحمان نے دورہ چین کے دوران نوا ز شریف کو فون کرکے پارلیمنٹ سے فاٹا انضمام بل رکوایا مگر نفاذ اسلام کیلئے کھبی مطالبہ نہیں کیا ۔ بعض قوتیں اٹھارویں آئینی ترمیم کا خاتمہ چاہتی ہے لیکن ایسے قوتوں کے گریبانوں پر میرا ہاتھ ہو گا۔ عمران خان مجھ پر کرپشن کے الزامات ثابت کریں بصورت دیگر ان کے خلاف عدالت جاؤنگا۔انہوں نے کہا کہ خدا کی قسم سو سالہ سیاست میں اے این پی نے کھبی پختونوں کے سروں کا سودا نہیں کیا ۔ ایک دھیلے کی کرپشن ثابت ہوئی تو سیاست چھوڑنا تو دور کی بات پھانسی پر چڑھنے کو تیار ہوں ۔ نیب کو بھی بلا آخر کار خیبر پختونخوا یاد آیا اور اب بی آر ٹی و بلین ٹری سونامی سمیت خیبر پختونخوا کے تمام اداروں کے کرپشن کی فائلیں کھل جائینگے ۔ انہوں نے کہا کہ خطے میں امن کے لئے اے این پی نے لا زوال قربانیاں اور شہادتیں دی ہیں مگر ہمارے قربانیوں کو نظر انداز کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس کے بھا شا اور مہمند ڈیم بنانے کے اعلان کا خیر مقدم کر تے ہیں۔ چیف جسٹس کے چندہ مہم میں اپنے بساط کے مطابق چندہ ڈالینگے ۔ مہمند اور بھا شا ڈیم کا مطالبہ اے این پی کا دیرینہ مطالبہ تھا۔تحریک انصاف اس وقت تحریک سیاسی مہاجرین بن چکی ہے ۔ کپتان کے ساتھ دیگر جماعتوں کے شامل ہونے والوں کو لوٹے کہنا لوٹے کی بے عزتی ہے ۔ بنوں میں عمران خان کا استقبال گندے ٹماٹروں سے کیا گیا جبکہ کراچی میں لوگوں نے ان کے خلا ف بلے اٹھائے ۔ یہ در اصل سیاسی طوائف اپنے مفادات کیلئے کپتان کا ساتھ دے رہے ہیں۔ مولانا مرکز میں نواز شریف اور سراج الحق اس صوبے میں پی ٹی آئی کے ساتھ تھے ۔مولانا صاحب اگر ایک کال پر فاٹا انضمام کا بل روک سکتا تھا تو کیا وہ اسلام نہیں نافذ نہیں کرواسکتا تھا۔ نیب کے بی آرٹی منصوبے اور بلین ٹری سونامی میں ریکارڈ کرپشن کے تحقیقات کا خیر مقدم کر تے ہیں مگر اسے منطقی انجام تک پہنچانا چاہیے ۔ آج باچا خان اور ولی خان کی بدولت ہم نے اس مٹی کو اپنا نام دیا۔ اٹھارویں ترمیم میں ہم نے اس صوبے کے 90 فیصد حقوق حاصل کئے ۔ انہو ں نے آفتاب احمد خان شیر پاؤ پر تنقید کر تے ہوئے کہا کہ کپتان اور شیرپاو نے گزشتہ پانچ سال میں کئی بار کٹی اور صلح کا کھیل کھیلا ۔ کرپشن کے الزام میں ان کو دو دفعہ حکومت سے نکالا گیا ۔ 25جولائی کو بلے کو دریا برد کر دینگے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -