آئندہ انتخابات پختون قوم کی بقاء کیلئے اہمیت کے حامل ہیں:حیدر ہوتی

آئندہ انتخابات پختون قوم کی بقاء کیلئے اہمیت کے حامل ہیں:حیدر ہوتی

  

مردان ( بیورورپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر اور سابق وزیراعلیٰ امیرحیدرخان ہوتی نے کہاہے کہ25جولائی کے انتخابات پختون قوم کی بقاء کے لئے اہم ہیں عوام کو سوچ سمجھ کر فیصلہ کرناہوگا ، جھوٹے دعوے اور وعدے کرنے والوں کو مسترد کرکے پختونوں کو سرخ جھنڈے تلے متحد ہوناہوگا ، اقتدار میں آکر مرکز سے نیا این ایف سی ایوارڈ منظور کرائیں گے ہسپتالوں اور سڑکوں سمیت دیگر ادھورے منصوبے مکمل کرکے دم لیں گے وہ باڑی چم میں پیپلز پارٹی کے رہنما عبدالاکبر عرف خان بابو ان کے خاندان او رساتھیوں کی اے این پی میں شمولیت کے موقع پر ان کی رہائش پر منعقدہ ایک بڑے شمولیتی جلسے سے خطاب کررہے تھے انہوں نے شمولیت اختیار کرنے والوں کو پارٹی ٹوپیاں پہناکران کے فیصلے کوسراہتے ہوئے مبارک بادی اورکہاکہ خان بابو اوران کا خاندان باچاخان کے پرانے سپاہی ہیں اوران کی شمولیت سے پارٹی مزید مضبوط اور مستحکم ہوگی امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ عوام کردار اورکارکردگی کو دیکھ کر ووٹ دیں اللہ نے موقع دیا تو مساجد اور مدارس کی خدمت کا سلسلہ دوبارہ شروع کریں گے اور ایک بارپھر صوبے میں بتاشوں کی بارش ہوگی ،انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی نے اپنے دور میں ہمارے منصوبوں کے فنڈز بند کردیئے تھے لیکن ہم سیاسی انتقام لینے کی بجائے ان کے منصوبوں کو سب سے پہلے فنڈزفراہم کریں گے اوردوسال کے اندتمام ادھورے منصوبے مکمل کرکے دم لیں گے انہوں نے کہاکہ سابق حکومت نے صوبے کو مالی مشکلات سے دوچار کردیا جس کے باعث آنے والی حکومت کو 80سے سو ارب روپے کے اضافی اخراجات کے لئے انتظامات کرنے ہوں گے اقتدار میں آکر باچاخان خپل روزگار سکیم کی طرح ہنرمند روزگار سکیم کا اجراء کرکے بے روزگار نوجوانوں کو 2سے دس لاکھ تک بلاسود قرضے دیں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ کپتان نے تبدیلی کے نام پر سادہ پختونوں کو دھوکہ دیا انصاف ، میرٹ ،روزگار اورکرپشن کے خاتمے کے دعویداروں نے پختونوں سے جھوٹے دعوے کئے ان کاکہناتھاکہ اب دوبارہ نئے وعدے وعید اور دعوؤں سے پختونوں کو ورغلا رہے ہیں لیکن پختون قوم جاگ گئی ہے اور اب وہ کاغذی لیڈروں کی حقیقت جان چکے ہیں اور25جولائی کو اپنے ووٹ پرچی کی طاقت سے نام نہاد تبدیلی والوں سے بدلہ لیں گے امیرحیدرخان ہوتی نے کہاکہ اے این پی کے دور حکومت میں ہرطرف ترقی کا دوردورہ تھا ان کی دور حکومت کا موازانہ قیام پاکستان سے لے کر پی ٹی آئی کی حکومت تک کی جائے تو کسی بھی دور میں اتنی ترقی نہیں ہوتی جس قدر ہمارے دور میں منصوبے مکمل کرلئے گئے انہوں نے کہاکہ ہم نے صوبے کو نام کی شناخت دی ،این ایف سی ایوارڈ دیا ،اٹھاوریں ترمیم کے ذریعے مرکز سے اختیارات صوبے کو منتقل کردیئے دوبارہ اقتدار میں آکر مرکزی حکومت سے نیا این ایف سی ایوارڈ منظور کراکر صوبے کے حقوق حاصل کریں گے اے این پی کے صوبائی صدر نے کہاکہ اقتدار چھورٹے وقت انہوں نے خزانہ بھراچھوڑا تھا آج صوبہ قرضوں تلے دباہواہے اقتدارمیں آکرنہ صرف خالی خزانہ بھریں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -