آزادکشمیر میں مقیم مہاجرین کے6فیصدکوٹے پرعملدرآمد نہ ہوسکا

آزادکشمیر میں مقیم مہاجرین کے6فیصدکوٹے پرعملدرآمد نہ ہوسکا

  

مظفرآباد(بیورورپورٹ)آزادکشمیر میں مقیم مہاجرین1989ء6فیصد کوٹے پر عملدرآمدنہ ہوسکا،کامسر کے بے گھر مہاجرین کی آبادی کاری کے بجائے مند پسند افراد کو ٹھوٹھہ کے اندر شیلٹرالاٹ کیے جانے لگے،وزیراعظم نے مہاجرین کیمپوں کے اندر پانی،صحت،گلیوں اور پختہ راستے کے اعلانات کیے جو بیوروکریسی نے ہوا میں تحلیل کر دیئے ،مہاجرین کاچیف سیکرٹری سے فی الفور نوٹس لینے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق آزادکشمیر بھر میں مقیم مہاجرین کسمپری کی زندگی گزاررہے ہیں ملازمتوں کے چھ فیصد کوٹہ پر قانون سازاسمبلی،محکمہ مال،تعلیم،صحت،جنگلات،امورحیوانات،اطلاعات،آئی ٹی،قانون،زراعت ،ہائی کورٹ،سپریم کورٹ کسی بھی جگہ عملدرآمد نہیں ہورہا ہے جس کی وجہ سے مہاجرین میں سخت تشویش کی لہر دوڑگئی ہے ،ماسوائے پولیس کے آزادکشمیر کا کوئی بھی محکمہ مہاجرین1989ء کے چھ فیصد کوٹہ پر عملدرآمدنہیں کر رہا ہے جس کا چیف سیکرٹری آزادکشمیر نوٹس لیں بصورت دیگر احتجاج پر مجبور ہونگے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -