ایون فیلڈریفرنس کے فیصلے سے پہلے احتساب عدالت نےنوازشریف کی فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا، حیران کن خبرآگئی

ایون فیلڈریفرنس کے فیصلے سے پہلے احتساب عدالت نےنوازشریف کی فیصلہ موخر کرنے ...
ایون فیلڈریفرنس کے فیصلے سے پہلے احتساب عدالت نےنوازشریف کی فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا، حیران کن خبرآگئی

  

اسلام آباد  (ڈیلی پاکستان آن لائن)ایوان فیلڈر یفرنس کا فیصلہ سنائےجانے سے قبل احتساب عدالت نے  سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے فیصلہ 7 روز کے لیے موخر کرنے کی درخواست پر سماعت مکمل کرکے فیصلہ محفوظ کرلیا، جو ممکنہ طورپر ایک گھنٹے بعد سنایا جائے گا، اگر نواز شریف کی درخواست منظور ہوگئی تو فیصلہ مؤخر کردیا جائے گا، بصورت دیگر فیصلہ جاری ہوجائے گا۔

یادرہے کہ نوازشریف نے اپنے وکیل خواجہ حارث کے معاون وکیل ظافر خان کے توسط سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مؤخر کرنے کے لیے باضابطہ درخواست گزشتہ روز دائر کی تھی، جس میں مؤقف اپنایا گیا تھا کہ وہ اس ٹرائل کا حصہ رہے ہیں اور مسلسل عدالت آتے رہے لیکن اچانک صورتحال تبدیل ہوئی اور ان کی اہلیہ کلثوم نواز کی طبعیت شدید خراب ہوگئی۔

درخواست میں کہا گیا کہ ڈاکٹرز نے کلثوم نواز کی طبعیت میں بہتری تک واپس نہ جانے کا مشورہ دیا ہے۔نواز شریف کی درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ مجبوری کے باعث وہ 6 جولائی کو پاکستان نہیں آسکتے، جیسے ہی ان کی اہلیہ کی طبعیت بہتر ہوگی وہ پاکستان آئیں گے، لہٰذا کچھ دن کے لیے فیصلہ مؤخر کیا جائے۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نوازشریف اور مریم نواز کی ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرانے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔مریم نواز کے وکیل امجد پرویز نے نوازشریف اور مریم نواز کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پڑھ کر سنائی ۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ سات روز کیلئے عدالتی فیصلہ موخر کیا جائے۔ دوسری جانب نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی نے اس درخواست پر اعتراض اٹھایا اور کہا کہ فیصلے کا وقت مقرر کیا جاچکا ہے اس لیے یہ درخواست قابل سماعت ہی نہیں ہے ۔ تین جولائی کو جس وقت فیصلہ محفوظ کیا جارہا تھا اس وقت یہ درخواست دائر کرسکتے تھے۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا ہے جو ایک گھنٹے بعد 11 بجے سنایا جائے گا۔

مزید :

قومی -