سعودی فوجی ہیڈ کوارٹر پر ڈرون حملہ اور پھر۔ ۔ ۔ انتہائی پریشان کن خبرآگئی

سعودی فوجی ہیڈ کوارٹر پر ڈرون حملہ اور پھر۔ ۔ ۔ انتہائی پریشان کن خبرآگئی
سعودی فوجی ہیڈ کوارٹر پر ڈرون حملہ اور پھر۔ ۔ ۔ انتہائی پریشان کن خبرآگئی

  

عدن(ویب ڈیسک) حوثی باغیوں نے یمن کے شہر عدن میں موجود سعودی اتحادی فوج کے ہیڈکوارٹرز پر ایک بار پھر ڈرون حملہ کیا  گیا  تاہم کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا۔ 

عرب میڈیا کے مطابق باغیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ حملے میں یمنی حکومت کے حامی متعدد جنگجو ہلاک ہوئے ہیں جبکہ عرب اتحاد نے حملے میں کسی جانی نقصان کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی اتحادی فوج نے ڈرون طیارہ مار گرایا ۔الشرق الاوسط کے مطابق  اتحادی افواج کے ہیڈ کوارٹر کے قریب ایک ڈرون کو محو پرواز دیکھا گیا لیکن اسے سیکیورٹی فورسز نے ہدف تک پہنچنے سے قبل ہی مارگرایا۔

خیال کیا جارہاہے کہ یہ ڈرون حوثی باغیوں سے وابستہ ہے تاہم عرب نیوز کے مطابق آزادذرائع سے اس کی تصدیق نہیں ہوسکی ، اس قسم کے طیارے بنیادی نوعیت کی ٹیکنالوجی سے تیار کیے جاتے ہیں اور عموماً ان سے جاسوسی کا کام لیا جاتا ہے۔

دوسری طرف  حوثی باغیوں سے وابستہ میڈیا نے اپنی رپورٹس میں دعویٰ  کیا ہے کہ حوثیوں نے ڈرون حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے سعودی اتحادی فوج پر ایسے مزید حملوں کی دھمکی دی ہے، باغیوں کا کہناتھاکہ یمن کے جنوبی علاقے میں بھرپور حملہ کیا اور صوبہ عدن کے علاقے بورائفہ میں واقع سعودی اتحادی کیمپ کو ان کی راکٹ بٹالین نے بموں سے نشانہ بنایا اور دعویٰ کیا کہ ان کے مسلح ڈرونز نے براہ راست سعودی فوجی ہیڈکوارٹر کو نشانہ بنایا۔ 

، یمن میں ہونے والی خانہ جنگی میں اب تک دس ہزار یمنی ہلاک اور 30 لاکھ سے زیادہ بے گھر ہو چکے ہیں جس کی وجہ سے اسے دنیا کے بدترین انسانی بحرانوں میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔

مزید :

عرب دنیا -