سلواکیا کا اسرائیل میں سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کا اعلان

سلواکیا کا اسرائیل میں سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کا اعلان
سلواکیا کا اسرائیل میں سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کا اعلان

  

مقبوضہ بیت المقدس (اے این این ) یورپی ملک سلواکیا نے تل ابیب میں قائم اپنا سفارت خانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق سلواکیا کا سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کا فیصلہ حال ہی میں سلواکیا کی پارلیمنٹ کے سپیکر میلا شٹاکھ کی اسرائیلی صدر روف ریفلین سے ملاقات کے دوران کیا گیا تھا۔ ملاقات میں دونوں ملکوں کے سفیر بھی موجود تھے، تاہم سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا۔ادھر اسرائیلی پارلیمنٹ کے سپیکر یولی اڈلچائن نے سلواکیا کی طرف سے القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے اعلان کو صہیونی ریاست کی سفارتی میدان میں غیرمعمولی کامیابی قرار دیا ہے۔ 

ان کا کہنا ہے کہ سلواکیا کا وفد2 روز سے اسرائیل میں موجود ہے اور وفد کے اعضا کو القدس میں سلواکیا کے سفارت خانے کی اہمیت کے بارے میں آگاہ کیا گیا ہے۔واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گذشتہ برس 6دسمبر کو مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا ابدی اور غیر منقسم دارالحکومت قرار دیا تھا، اس فیصلے کے بعد رواں سال 14 مئی کو امریکا نے اپنا سفارت خانہ تل ابیب سے القدس منتقل کردیا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -