سعودی عرب سے سال کے صرف پہلے 3 ماہ میں ہی۔۔۔ ایسی خبر آگئی کہ پاکستانی حکومت اور عوام، دونوں کی پریشانی کی کوئی انتہا نہ رہے گی

سعودی عرب سے سال کے صرف پہلے 3 ماہ میں ہی۔۔۔ ایسی خبر آگئی کہ پاکستانی حکومت ...
سعودی عرب سے سال کے صرف پہلے 3 ماہ میں ہی۔۔۔ ایسی خبر آگئی کہ پاکستانی حکومت اور عوام، دونوں کی پریشانی کی کوئی انتہا نہ رہے گی

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں غیر ملکیوں کے بے روزگار ہونے کا سلسلہ تو ایک عرصے سے جاری ہے لیکن یہ جان کر یقیناً آپ کو بھی حیرت ہو گی کہ اب یہ سلسلہ کتنی تیزی پکڑ گیا ہے۔ تازہ ترین اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ مالی سال 2018ء کے صرف پہلے تین ماہ کے دوران 2 لاکھ 34 ہزار غیر ملکی روزگار سے محروم ہوچکے ہیں۔ 

ویب سائٹ ’’مڈل ایسٹ مانیٹر‘‘ کے مطابق یہ اعدادوشمار جمعرات کے روز جاری کی گئی رپورٹ میں سامنے آئے ہیں، جس کے مطابق ملازمتوں سے محروم ہونے والے غیرملکیوں کا تعلق پرائیویٹ سیکٹر سے بھی ہے اور سرکاری سیکٹر سے بھی۔ سعودی جنرل اتھارٹی فار سٹیٹیکس کی جانب سے کچھ اعدادوشمار جاری کئے گئے تھے جس کی بناء پر اناطولیہ ایجنسی نے ایک سروے کرکے ملازمتوں سے محروم ہونے والے غیرملکیوں کے متعلق رپورٹ جاری کی ہے۔ 

سال 2017ء کی چوتھی سہ ماہی کے اختتام پر سعودی عرب میں غیر ملکی ملازمین کی تعداد 10.42 ملین تھی جو سال 2018ء کی پہلی سہ ماہی کے اختتام پر کم ہوکر 10.18 ملین پر آچکی ہے۔ دوسری جانب اسی عرصے کے دوران سعودی ملازمین کی تعداد میں بھی کمی دیکھی گئی ہے جو 3.16 ملین سے کم ہوکر 3.15 ملین پر آگئی ہے۔ یہ اعدادوشمار سعودی حکومت کی اس مہم کے برعکس نتائج ظاہر کررہے ہیں جس میں غیر ملکی ملازمین کی جگہ زیادہ سے زیادہ سعودی شہریوں کو ملازمتیں فراہم کرنے کی کوشش کی جارہی تھی۔ سعودی ملازمین کی تعداد میں مجموعی طور پر کمی ضرور آئی ہے البتہ سال 2017ء کی آخری سہ ماہی کے دوران شرح روزگار میں اضافہ ہوا ہے، جو گزشتہ تین ماہ کے دوران 12.8 فیصد سے بڑھ کر 12.9 فیصد پر پہنچ چکی ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -