پاک چائنہ بزنس فورم میں چینی کمپنیوں کی کثیر تعداد شرکت کرے گی: محمد مدثر ٹیپو

پاک چائنہ بزنس فورم میں چینی کمپنیوں کی کثیر تعداد شرکت کرے گی: محمد مدثر ...

لاہور(پ ر) پاکستانی قونصل جنرل برائے چینگ ڈو نے محمد مدثر ٹیپونیکہا ہے کہ سی چوان، ینان، گوائی زو اور چانگ چنگ سے مزید چینی کمپنیاں، پاکستان کے حقیقی پوٹینشنل کے بارے میں آگہی حاصل کرنے کے لیے، لاہور میں اس ستمبر میں منعقد ہونے والے 7ویں پاک چائنہ بزنس فورم میں شرکت کریں گی۔پاکستان مشن میں منعقدہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاک چائنہ بزنس فورم نے حالیہ سالوں میں شاندار ترقی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان اور چین کے مابین اقتصادی، تجارتی صنعتی اور کاروباری روابط کو مزید مضبوط کرنے کے لیے قابل قدر کردار ادا کیا ہے۔ اس فورم کی تیاری کی نگرانی کرنے والے گروپ نے پروفیسر ڈاکٹر قیصر عباس (صدر پی سی بی ایف) کی قیادت میں پاکستانی مشن کا دورہ کیا جس میں سینئر ممبر کامسیٹس یونیورسٹی،امجد حسین اور ایورسٹ انٹرنیشنل ایکسپو لمیٹڈ کے سی ای او،فا وین یا بھی شامل تھے۔ اس دورہ کا مقصد بڑی چینی کمپنیوں کی 7ویں فورم میں شرکت کو یقینی بنانے کے لیے پاکستانی مشن کی معاونت حاصل کرنا تھا۔ مشن نے وفد اورمختلف چیمبرز کے ممبران اور یونیورسٹیوں کے نمائندگان کے مابین تبادلہ خیال کے لیے ملاقات کا انتظام کیا تاکہ وہ 7ویں فورم کو کامیاب بنانے کے لیے اپنے اپنے خیالات کا اظہار کر سکیں۔ چینی شرکاء کا کہنا تھا کہ پاکستان کے اندر لائٹنگ کی مصنوعات، نیو انرجی، گھریلو آلات، آلات جراحی، کھیلوں کے سامان، وغیرہ جیسی صنعتوں میں ترقی کا بے پناہ پوٹینشل موجود ہے، انہوں نے امید ظاہر کی کہ آئندہ فورم چینی کاروباری اداروں کوپاکستان کے اس پوٹینشل سے روشناس کروانے کی جانب ایک بڑا قدم ہو گا۔ میٹنگ کے شرکاء نے چینی کمپنیوں کے لیے پاکستان میں اپنے کاروبار کو مستحکم کرنے اور پاکستان کی کم لاگت معیشت سے مستفید ہونے کے لیے ضروری اقدامات اورذرائع کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا۔

دورہ کرنے والی ٹیم کے ارکان نے 7ویں پاک چائنہ بزنس فورم کے لیے معاونت فراہم کرنے پر پاکستانی مشن کا شکریہ ادا کیا۔ کامسیٹس انسٹی ٹیو ٹ آف انفارمیشن ٹیکنالوجی، پاکستان اور چین کے مابین دو طرفہ معاشی اور کاروباری شعبوں میں یونیورسٹی -انڈسٹری تعاون کے فروغ کے لیے گذشتہ کئی سالوں سے پاک چائنہ بزنس فورم منعقد کروا رہی ہے۔ بدر الزماں، کمرشل قونصلر، پاکستان ایمبیسی بیجنگ، ڈاکٹر عطا ء الرحمن، قونصلر ٹیکنیکل افیئرز، پاکستان ایمبیسی بیجنگ نے مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی۔ نواب علی راہوجو، قائم مقام قونصل جنرل شنگھائی نے اس ایونٹ کو پاکستان اور چین کے کاروباری اداروں کے لیے یکساں طور پر سود مند بنانے کے لیے معاونت فراہم کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔ ڈاکٹر جنید زیدی، ایگزیکٹو ڈائریکٹر کامسیٹس و بانی پی سی بی ایف نے کہا کہ پاک چائنہ بزنس فورم2019کا مقصد چائنہ سے پاکستان میں براہ راست سرمایہ کاری کا فروغ ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر راحیل قمر، ریکٹر کامسیٹس کا کہنا تھا کہ ون بیلٹ ون روڈ اور پاک چائنہ اکنامک کاریڈور، پاکستان اور جنوب مغربی کے درمیان باہمی روابط کی مضبوطی کے لیے ایک بہترین موقع ہے، انہوں نے امید ظاہر کی کہ دونوں خطوں کے درمیان متنوع اور وسیع نوعیت کے معاشی تعلقات کو جلا ملے گی۔ انہوں نے پاکستانی اور چینی یونیورسٹیوں، ریسرچ سنٹرز اور تھنک ٹینکس کے مابین مزید گہرے روابط کی اہمیت پر زور دیا۔ پروفیسر ڈاکٹر جنید زیدی، پاک چائنہ بزنس فورم کے بانی ہیں جبکہ پروفیسر ڈاکٹر قیصر عباس، پی سی بی ایف کے صدر اور اس گلوبل فورم کے روح رواں ہیں۔ پی سی بی ایف،ون بیلٹ ون روڈ اور سی پیک کے منصوبوں کو نتیجہ خیز بنانے کے لیے پاکستان اور چین کے کاروباری افراد اور اداروں کے مابین رابطے کے پل کا کام کرتا ہے۔ یہ پاک چائنہ بزنس فورم ہی تھا جس میں 700کے قریب چینی کاروباری افراد نے پاکستان کا دورہ کیا اور مفاہمت کی بے شمار یاد داشتوں پر دستخط ہوئے۔ پروفیسر ڈاکٹر قیصر عبا س نے ریکٹر کامسیٹس پروفیسر ڈاکٹر راحیل قمر کا ہر قدم پر رہنمائی اور معاونت فراہم کرنے پر شکریہ ادا کیا اور 7ویں پاک چائنہ بزنس فورم کو نئے پاکستان کے ویژن کے مطابق، پاکستان کے لیے مزید سودمند بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔

مزید : کامرس


loading...