سنہری باتیں

سنہری باتیں

عالم کا امتحان اس کے علم کی کثرت سے نہیں ہوتا بلکہ دیکھنا چاہیے وہ فتنہ انگیز باتوں سے کیسے بچتا ہے ۔

زیادہ گفتگو سوچ و فکر کو مردہ کردیتی ہے ۔ ۔

خلوص اور عزت بہت نایاب تحفے ہیں اس لیے ہر کسی سے ان کی امید نا رکھوکیونکہ بہت کم لوگ دل کے امیر ہوتے ہیں ۔

تم جہاں کہیں بھی ہو اللہ کا خوف دل میں رکھا کرو، اور گناہ ( سرزد ہوجانے ) کے بعد نیکی کر لیا کرو ، وہ اس گناہ کو مٹا ڈالے گی ، اور لوگوں کے ساتھ اچھے اخلاق سے پیش آیا کرو ۔

جب تعلیم کا مقصد صرف نوکری کا حصول ہوگا تو سماج میں نوکر ہی پیدا ہوں گے راہنما نہیں ۔

دو چیزیں اپنے اندر پیدا کرلو ۔ ۔

1 ۔ چپ رہنا

2 ۔ معاف کرنا

کیونکہ چپ رہنے سے بڑا کوئی جواب نہیں اور معاف کردینے سے بڑا کوئی انتقام نہیں ۔

بے وقوف جب تک خاموش رہتا ہے عقل مند شمار ہوتاہے ۔

مصیبت سب سے بہترین کسوٹی ہے جہاں پر دوست پرکھے جاتے ہیں ۔

جب آپ یہ سوچیں کہ ہار کی صورت میں کیا کریں گے ۔ ۔ ;238; تو آپ شکست کھا گئے ہیں ۔

اس رب کی ناراضگی سے ڈرتے رہو جس کی صفت یہ ہے کہ اگر تم بولتے ہو تو وہ سنتا ہے اور اگر دل میں رکھو تو وہ جانتاہے ۔

اگر آپ کسی کام کا پختہ ارادہ کرلیں تو پھر اللہ کی مدد بھی شامل حال ہو جاتی ہے اور کام جلد تکمیل تک پہنچ جاتاہے ۔

صبح کی نیند انسان کے ارادوں کو کمزور کرتی ہے ، منزلوں کو حاصل کرنے والے کبھی دیر تک سویا نہیں کرتے ۔

پرانا تجربہ نئی تعمیر کی بنیاد ہوتاہے ۔ ۔

کام شروع کرو اللہ کے نام کے ساتھ اور کرتے رہواللہ کی مدد کے ساتھ اور ختم کرواللہ کے شکریے کے ساتھ ۔ ۔ کیونکہ اللہ کی مدد کے بغیر کو ئی بھی کام تکمیل تک نہیں پہنچ سکتا ۔

اللہ کی عطاؤں پر (الحمدللہ) اور اپنی خطاؤں پر ( استغفراللہ) کہنا اللہ کو بہت پسند ہے ۔

زندگی کی ترقی و تنزلی کا انحصار بیوی کی محبت پر ہے ۔

محبت دور کے لوگوں کو قریب، اور عداوت قریب کے لوگوں کو دور کردیتی ہے ۔

کسی فکر کو قبول کیے بغیر اس پر غور کرنا آپ کے تعلیم یافتہ ہونے کی نشانی ہے ۔

جو شخص بہانہ بنانے میں بہت اچھا ہو وہ کسی اور کام میں اچھا نہیں ہو سکتا ۔

بے وقوف آدمی کا اصل المیہ یہ ہے کہ اس کی کوئی حماقت آخری نہیں ہوتی ۔

شیطان کی کامیابی کے لیے یہی کافی ہے کہ خیر و شر کی کشمکش میں اچھے لوگ کچھ نہ کریں ۔

پیسہ بد ترین آقا ہے مگر بہترین غلام ہے ۔

میں کبھی چپ رہ کر نہیں پچھتایا جب پچھتایا بول کر پچھتایا ۔

جنت کا حقیقی مستحق وہ ہے جو قربانی کے درجے میں اس کا طلبگار بنے آج کا مسلماں تو خواہش کے درجے میں بھی اس کا طلبگار نہیں ۔ ;63;

بہترین انسان وہ ہے جو مسائل حل کرتاہے اور بدترین انسان وہ ہے جو مسائل پیدا کرتاہے ۔

اس نے کیا پایا جس نے خدا کو کھو دیا ۔ اس نے کیا کھویا جس نے خدا کو پالیا ۔

جو پڑھ نہیں سکتا اور جو پڑھتا نہیں یکساں طور پر جاہل رہتے ہیں ۔

وقت کی بربادی کی سب سے بڑی وجہ اس کام کا آغاز ہے جسے آپ پورا نہ کریں ۔

آج خدا کے نام پر ہر چیزکی طرف بلایا جارہا ہے سوائے اس چیز کے جس کی طرف خود رب نے بلایا ہے ۔

جہاز بندرگاہ میں محفوظ ہوتےہیں مگر بندرگاہ کے لیے بنائے نہیں جاتے ۔

اگر آپ مسائل سے نجات پانا چاہتے ہیں تو انہیں حل کرناشروع کردیں ۔

آپ کا دشمن وہ جس سے آپ کو نقصان پہنچے قطع نظر اس کے کہ وہ آپ کے خلاف ہے یا آپ کے ساتھ ۔

خدا نے چیزیں استعمال کرنے اور لوگ محبت کرنے کے لیے بنائے ہیں مگر انسان چیزوں سے محبت اور لوگوں کو استعمال کر تے ہیں ۔

مطالعہ کیجیے یہ انسان کا وہ شرف ہے جو کسی جانور کو حاصل نہیں ۔

اصولوں کے لیے جنگ کرنا بہت آسان ہے ۔ اصولوں کے مطابق زندگی گزارنا بہت مشکل ہے ۔

اعلیٰ اخلاقی سطح اکثر دو قسم کے لوگوں میں پیدا ہوتی ہے ۔ وہ لوگ جن کی تربیت بہت اعلیٰ ہو یا وہ لوگ جن کا مقصدحیات بہت اعلیٰ ہو ۔

اہم یہ نہیں کہ رمضان میں آپ نے کیا اعمال کیے اہم یہ ہے کہ رمضان کی تربیت نے آپ کو کیسا بنا دیا ۔

معلومات نہیں حکمت ڈھونڈیے معلومات ماضی کا علم ہے اور حکمت مستقبل کا ۔

طاقتور کا نقصان نہ کیجیے وہ آپ کی دنیا کو خطرے میں ڈال دے گا ۔ کمزور کا نقصان نہ کیجیے وہ آپ کی آخرت کو خطرے میں ڈال دے گا ۔ ;63;

مزید : ایڈیشن 1


loading...