قیدیوں کیلئے ایک قانون،نواز شریف کو اضافی سہولت کیسے دیں؟ہائیکورٹ

قیدیوں کیلئے ایک قانون،نواز شریف کو اضافی سہولت کیسے دیں؟ہائیکورٹ

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کے جسٹس مامون رشید شیخ نے جیل میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف سے ہفتے میں دو روز ملنے کی اجازت کے لئے مریم نواز کی طرف سے دائر درخواست پرمیاں نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان کو درخواست میں فریق بنانے کی اجازت دیتے ہوئے مزیدسماعت 8جولائی پر ملتوی کردی۔دوران سماعت فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ کہ قیدیوں کے لئے قانون ایک ہے، میاں نوازشریف کو اضافی سہولت کیسے دیں؟سابق وزیر اعظم کوموقع ملا مگرانہوں نے علاج نہیں کرایا۔درخواست گزار مریم نواز کے وکیل اعظم نذیرتارڑنے موقف اختیار کیا کہ میاں نواز شریف دل سمیت متعدد عارضوں میں مبتلا ہیں،ان کے ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان کوبھی ان سے ملاقات کی اجازت نہیں دی جارہی،نواز شریف کی صحت کی حالت سنگین ہے،ڈاکٹرسے ملاقات ان کا بنیادی حق ہے۔فاضل جج نے کہا کہ پہلے بھی میاں نوازشریف کوموقع ملا اس وقت انہوں نے علاج نہیں کرایا،ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو تو درخواست میں فریق ہی نہیں بنایا گیا۔جس پر مریم نواز کے وکیل نے اس بابت درخواست میں ترمیم کی اجازت کی استدعا کی جو عدالت نے منظور کرلی۔

ایک قانون

مزید : صفحہ آخر


loading...