وزیر خارجہ سے قازق سفیر کی الوداعی ملاقات،باہمی دلچسپی کے امور پر گفتگو

وزیر خارجہ سے قازق سفیر کی الوداعی ملاقات،باہمی دلچسپی کے امور پر گفتگو

اسلام آباد (آئی این پی)وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان کے نزدیک،وسط ایشیائی ریاستوں میں قازقستان خاص اہمیت کا حامل ہے،1991 میں جب قازقستان کو آزادی ملی تو پاکستان نے سب سے پہلے اسے بطور ریاست تسلیم کیا، پاکستان اور قازقستان کے مابین تجارتی حجم اور سرمایہ کاری میں اضافے کی ضرورت ہے، دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کے ذریعے ہی دونوں ملکوں کی عوام کو قریب تر لا کر تعلقات کو مزید وسعت دی جا سکتی ہے، پاکستان اور قازقستان خطے کی ترقی اور خوشحالی کے لئے ایک جیسا نقطہ نظر رکھتے ہیں۔جمعہ کوپاکستان میں تعینات رہنے والے قازقستان کے سفیر بارلی بے سادیکوف کی وزارتِ خارجہ میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے الوداعی ملاقات کی۔دوران ملاقات دو طرفہ تعلقات کے فروغ سمیت باہمی دلچسپی کے مختلف امور پر تبادلہ ء خیال کیا گیا۔وزیر خارجہ نے پاکستان اور قازقستان کے مابین دو طرفہ تعلقات کو وسعت دلانے کے سلسلے میں، قازق سفیر کی خدمات کو سراہا۔انھوں نے کہاکہ پاکستان کے نزدیک،وسط ایشیائی ریاستوں میں قازقستان خاص اہمیت کا حامل ہے۔1991 میں جب قازقستان کو آزادی ملی تو پاکستان نے سب سے پہلے اسے بطور ریاست تسلیم کیا۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ پاکستان اور قازقستان کے مابین تجارتی حجم اور سرمایہ کاری میں اضافے کی ضرورت ہے، دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کے ذریعے ہی دونوں ملکوں کی عوام کو قریب تر لا کر تعلقات کو مزید وسعت دی جا سکتی ہے۔ وزیر خارجہ نے قازقستان اور پاکستان کے درمیان روابط کے فروغ کے لیے ڈائریکٹ فلائٹس شروع کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔انھوں نے کہاکہ پاکستان اور قازقستان خطے کی ترقی اور خوشحالی کے لئے ایک جیسا نقطہ نظر رکھتے ہیں۔ وزیر خارجہ نے قازقستان کی حکومت، عوام اور پارلیمان کیلئے نیک خواہشات کا پیغام بھی دیا۔ قازق سفیر نے کہا کہ ان کا پاکستان میں قیام انتہائی یادگار رہا اور وہ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تعلقات کے فروغ دینے کے لیے اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے۔

وزیر خارجہ

مزید : صفحہ اول


loading...