’’ میری شادی نزدیک ہے مگر ۔ ۔ ۔‘‘ بلاول نے شرماتے ہوئے دل کی بات کہہ دی

’’ میری شادی نزدیک ہے مگر ۔ ۔ ۔‘‘ بلاول نے شرماتے ہوئے دل کی بات کہہ دی
’’ میری شادی نزدیک ہے مگر ۔ ۔ ۔‘‘ بلاول نے شرماتے ہوئے دل کی بات کہہ دی

  


پشاور(ویب ڈیسک)  چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری نے کہا ہے کہ میری شادی نزدیک ہے مگر تفصیلات نہیں بتاسکتا۔پشاور پریس کلب میں میٹ دی پریس سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم پر حملے ہورہے ہیں، وزیراعظم اس ترمیم کو واپس کرنے کے لیے کوششیں کررہے ہیں، واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ہر قسم کا دباؤ برداشت کرنے کو تیار ہیں مگر اٹھارویں ترمیم، اپنے نظریات اور آزادی اظہار رائے پر کوئی آنچ نہیں آنے دیں گے۔ایکسپریس کے مطابق بلاول کاکہناتھاکہ میری شادی نزدیک ہے مگر تفصیلات نہیں بتاسکتا، وہ ایک سوال کا جواب دے رہے تھے ۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ پریس کلب میں ہم نے مشرف کی آمریت کا مقابلہ کیا،پھر سےکسی آمر کا مقابلہ کرناپڑا تو ملک کےتمام پریس کلب ہمارےشانہ بشانہ ہوں گے،انہوں نے کہا کہ الیکشن میں انتہا پسندی کو فروغ دیا گیا، سیاست کے بجائے ذاتیات کو نشانہ بنایا گیا، آج جو کچھ ہو رہا ہے جمہوریت نہیں ہے آج پارلیمان کے پاس وہ طاقت نہیں ہے ہم اپنے انسانی حقوق پرسمجھوتہ کرتے جا رہے ہیں۔قبل ازیں پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے 5 جولائی یومِ سیاہ کے موقع پرپیغام میں کہا کہ آمروں اوران کی کٹھ پتلیوں نے معاشرے، معیشت اورجغرافیہ کوشدید نقصان پہنچایا، ضیاء نے منشیات اورغیرقانونی اسلحہ سے ملک میں نفرت، لسانیت اورمذہبی منافرت کے بیج بوئے جب کہ شہید بھٹوسمجھتے تھے کہ غربت و افلاس قدرت کے نہیں انسانوں کے پیدا کردہ ہیں۔بلاول نے کہا کہ شہید بھٹو نے پوری قوم کو جگایا اوراسے بااختیار بنایا۔ بلاول نے کہا کہ بیگم بھٹواورشہید بی بی نے ملک میں بحالیِ جمہوریت کے لیئے جدوجہد کی ، قائدِ عوام کی جانب سے کمزورطبقات کو بااختیار بنانے پراستحصالی گروہ چوکنا ہوگیا جب کہ استحصالی گروہ کی سازشوں نے شہید بھٹو کی حکومت کا خاتمہ کیا۔بلاول بھٹو نے کہا کہ پیپلزپارٹی ملک میں جمہوریت کی مکمل بحالی تک سُکھ کا سانس نہیں لے گی، سلیکٹڈ وزیراعظم ملک کے ہرادارے، معیشت، اقدارکوتباہ کرنے پرتُلا ہوا ہے لیکن ’جمہوریت بہترین انتقام ہے‘ ، کے نعرے تلے آمریتی عناصراورسلیکٹڈ وزیراعظم کے خلاف جدوجہد جاری رہے گی۔بلاول نے کہا کہ آصف علی زرداری کے خلاف انتقامی کارروائیاں 5 جولائی 1977 کا تسلسل ہیں، آمریتی عناصراورجمہوریت پسندوں کے درمیان جنگ ابھی جاری ہے، کچھ بھی کرلیں آخری فتح پاکستانی عوام کی ہوگی، آئیے، آج نظریئہ جمہوریت سے تجدید عہد نوکریں۔

مزید : قومی


loading...