پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کے فیصلے کے بعد نیب کی تحویل میں موجود ملزمان کیخلاف حکومت نے ایک اور فیصلہ کرلیا، اپوزیشن اراکین کیلئے نئی پریشانی

پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کے فیصلے کے بعد نیب کی تحویل میں موجود ملزمان ...
پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کے فیصلے کے بعد نیب کی تحویل میں موجود ملزمان کیخلاف حکومت نے ایک اور فیصلہ کرلیا، اپوزیشن اراکین کیلئے نئی پریشانی

  


اسلام آباد(ویب ڈیسک)  قومی احتساب بیورو (نیب) کی حراست اور جیل میں موجود اراکین اسمبلی کو قائمہ کمیٹیوں کی رکنیت نہ دینے کا فیصلہ کرلیا گیا۔ہم نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان کا چوہدری پرویز الہٰی سے رابطہ ہوا اور ذرائع نے بتایا کہ نیب اور جیل میں قید ارکان کی رکنیت سے متعلق فیصلہ وزیراعظم کی مشاورت سے ہوگا۔وزیراعظم عمران خان اور چوہدری پرویز الہٰی کا ارکان اسمبلی کے قائمہ کمیٹی اجلاس کے لیے پروڈکشن آڈرز کا سلسلہ ختم کرنے کا بھی امکان ہے۔عبدالعلیم خان کی قائمہ کمیٹیوں سے استعفے کے بعد ان کمیٹیوں کی رکنیت کے بارے میں وزیراعظم سے مشاورت کے بعد فیصلہ ہوگا۔ذرائع نے مزید بتایا کہ ملاقات کے دوران سابق صوبائی وزیر سبطین خان، پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز، خواجہ سعد اور سلمان رفیق کے پروڈکشن آڈرز کے بارے میں بھی مشاورت کی گئی۔یادرہے کہ اس سے قبل حکومت نے پروڈکشن آرڈر بھی جاری نہ کرنےکا فیصلہ کیا ہے ، وزیراعظم واضح کہہ چکے ہیں کہ پکڑے گئے اور پھر پروڈکشن آرڈر پر اسمبلی میں آتے ہیں اور تنقید بھی کرتے ہیں۔

مزید : قومی


loading...