یہ بھی کمال ہے، جو شخص عرب میں چپڑاسی کے اقامے پر کام کرتا رہا آج کل وہ۔۔۔۔احسن اقبال کی تنقید پر ڈاکٹر شہباز گل بھی میدان میں آگئے

یہ بھی کمال ہے، جو شخص عرب میں چپڑاسی کے اقامے پر کام کرتا رہا آج کل ...
یہ بھی کمال ہے، جو شخص عرب میں چپڑاسی کے اقامے پر کام کرتا رہا آج کل وہ۔۔۔۔احسن اقبال کی تنقید پر ڈاکٹر شہباز گل بھی میدان میں آگئے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ""جعلی پروفیسر"" سے شروع کر کے جعلی معیشت دان اور پھر ایک جعلی لیڈر کے جعلی قطری خطوں سے لے کرتمام جعلسازیوں کا جعلی دفاع کرنے والے احسن اقبال اصل میں ایک مطمئن کرپٹ ہیں،یہ بھی کمال ہےکہ جو شخص عرب میں چپڑاسی کے اقامے پر کام کرتا رہا آج کل وہ معیشت سے لیکر سیاحت پر لیکچر دے رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر ٹویٹس کرتے ہوئے ڈاکٹر شہباز گل کا کہنا تھا کہ  ""جعلی پروفیسر"" سے شروع کر کے جعلی معیشت دان اور پھر ایک جعلی لیڈر کے جعلی قطری خطوں سے لے کر تمام جعلسازیوں کا جعلی دفاع کرنے والے احسن اقبال اصل میں ایک مطمئن کرپٹ ہیں،انکو محترمہ مریم صفدر کا اتالیق مقرر کیا گیا تا کہ یہ انکو کو جھوٹ اور جعلسازی کی بہترین تعلیم دے سکیں۔انہوں نے کہا کہ یہ بھی کمال ہے کہ جو شخص عرب میں چپڑاسی کے اقامے پر کام کرتا رہا، آج کل وہ معیشت سے لیکرسیاحت پرلیکچردے رہے ہیں، اپنے جھوٹ، کرپشن پرشرمندگی کی بجائے مکمل ڈھٹائی کیساتھ جعلی پروفیسر سے جعلی معیشت دان تک کا سفر جاری ہے.

انہوں نے کہا کہ کرپشن تو سب نے کی لیکن احسن اقبال نے کرپشن عبادت سمجھ کے کی،اکانومی تو آپ تباہ کر کے گئے، فارن پالیسی بھی، انڈیا کا تو نام تک نہیں لے پاتے تھےلیکن آج کل آپ دن میں تین بار چیخیں مارتے ہیں، حالت یہ ہے کہ آپکو رات کے ایک بجے بھی سکون نہیں اور ٹویٹ کرنا پڑتا ہے، یہ سب واضح کر رہا ہے کہ آپ کتنے خوفزدہ ہیں کہ اپنی کرپشن کا حساب دینا پڑنا ہے۔

اس قبل انہوں نے بلاول بھٹو زرداری کا "" پرچی چئرمین"" کے نام سے تمسخر اڑاتے ہوئے کہا کہ  جب فنڈ آتا ہے تو ہم کھا جاتے ہیں،اٹھارویں ترمیم کے بعد جب زیادہ فنڈ آتا ہے تو ہم زیادہ کھا جاتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -