سارک تنظیم خطے کیلئے انتہائی اہمیت کی حامل، پاکستان چارٹر پرقائم: وزیراعظم

  سارک تنظیم خطے کیلئے انتہائی اہمیت کی حامل، پاکستان چارٹر پرقائم: ...

  

لاہور،اسلام آباد(نیوز ایجنسیاں)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان سارک تنظیم کو بہت زیادہ اہمیت دیتا ہے اور وہ اس کے چارٹر کے اصولوں اور مقاصد پر قائم ہے۔ افتخار علی ملک کے نام اپنے پیغام میں وزیر اعظم عمران خان نے انہیں دو سال کیلئے سارک چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر کا عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا اس عہدے پر فائز ہونا ملک کیلئے ایک اعزاز ہے۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ تجربہ کار تاجر رہنما افتخار علی ملک علاقائی تجارت کے فروغ اور سارک ممبر ممالک کو قریب لانے کیلئے اپنی بہترین صلاحیتوں کو بروئے کار لائیں گے۔ پاکستان نے ہمیشہ اس علاقائی فورم کو خودمختاری اور مساوات کے اصول پر مبنی باہمی تعاون کیلئے ایک متحرک تنظیم بنانے کی کوشش کی ہے۔ سارک کے ارکان دیگر ممبر ممالک کی معیشتوں کو مضبوط بنانے اور مختلف شعبوں میں باہمی تعاون کو فروغ دینے کی بے پناہ صلاحیت رکھتے ہیں۔ تنظیم کو خطے کی معاشی، ثقافتی اور معاشرتی نمو کیلئے کام کرنے اور خطے میں خوشحالی کیلئے ممبر ممالک کے درمیان رابطوں کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ دوسری طرف وزیراعظم عمران خان نے انٹرنیشنل لیبرز آرگنائزیشن کی دعوت قبول کرلی، عمران خان 8جولائی کو عالمی فورم پر اہم خطاب کرتے ہوئے عالمی سطح پر محنت کشوں کی بیروزگاری کا معاملہ اٹھائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق عالمی سطح پر محنت کشوں اور مزدوروں کی بیروزگاری کے معاملے سے متعلق جبری برطرفیاں رکوانے کیلئے حکومت پاکستان کی کوششیں رنگ لے آئیں۔ انٹرنیشنل لیبرآ ر گنا ئزیشن نے معاون خصوصی زلفی بخاری کے خط پر جوابی رد عمل دیا اور پاکستان کی درخواست پر ”آئی ایل او”کا خصوصی سیشن طلب کرلیا گیا۔ زلفی بخاری نے خط کے ذر یعے اوور سیزپاکستانی محنت کشوں کی بیروزگاری کا معاملہ اٹھایا تھا۔ ردعمل میں آئی ایل او نے وزیراعظم عمران خان کو عالمی فورم پر خصوصی خطاب کی دعوت دی۔ پاکستان نے محنت کشوں کی بیروزگاری کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھا دیا، آئی ایل او نے درخواست کی ہے کہ وزیراعظم پاکستان اہم مسئلے پر دنیا کو اعتماد میں لیں۔ وزیراعظم نے انٹرنیشنل لیبرزآرگنائزیشن کی دعوت قبول کرلی۔ نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم عمران خان 8جولائی کوعالمی فورم پراہم خطاب کریں گے۔ محنت کش اور مزدوروں کے تحفظ کیلئے ہنگامی اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا جائیگا۔ عمران خان ممبرممالک لیبر اور ورک فورس کیلئے نئی حکمت عملی پر بحث کا آغازکریں گے۔

وزیراعظم

مزید :

صفحہ اول -