فرٹیلائنرر مافیا زرعی پیکیج کو ناکام بنانے پر کمر بستہ ہے، شاہد رشید کا الزام

    فرٹیلائنرر مافیا زرعی پیکیج کو ناکام بنانے پر کمر بستہ ہے، شاہد رشید کا ...

  

اسلام آباد(آن لائن) تاجر رہنما اوراسلام آباد چیمبر کے سابق صدر شاہد رشید بٹ نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے اعلان کردہ 56.6 ارب روپے کے زرعی پیکج قابل ستائش ہے جس سے ٹڈی دل، وبا اور لاک ڈوان سے متاثرہ لاکھوں کاشتکاروں کو ریلیف ملے تاہم فرٹیلائیزر مافیا مصنوعی قلت کے زریعے اسے ناکام بنانے پر تلی ہوئی ہے جس سے ملک میں فوڈ سیکورٹی کا مسئلہ پیدا ہو سکتا ہے۔شاہد رشید بٹ نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ کسانوں کو کھاد کی خریداری میں مدد دینے کے لئے 37 ارب روپے کی سبسڈی دینے کا فیصلہ کیا ہے جس سے زرعی معیشت کو مستحکم کرنے میں مدد ملے گی۔کھاد کے علاوہ معیاری بیجوں اور بہتر کیڑے مار ادویات کا استعمال یقینی بنانے کے لئے کم از کم بیس ارب روپے مختص کئے جائیں جبکہ مقامی طور پر تیار شدہ اور درامد شدہ زرعی مشینری پر ٹیکس کم کئے جائیں تاکہ انکی قیمت کم کی جا سکے۔سستے زرعی قرضے جاری کرنے میں حقیقی کاشتکاروں اور چھوٹے کسانوں کو ترجیح دی جائے۔زرعی قرضے اس وقت تک ضائع ہوتے رہیں گے جب تک تمام صوبوں کا کوٹہ مقرر نہ کیا جائے کیونکہ ان میں سے 91 فیصد صرف ایک صوبے کو مل رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ دیگر کئی اہم فصلوں کی طرح گندم کی فی ہیکٹر پیداوار میں گزشتہ گیارہ سال سے کوئی اضافہ نہیں ہوا ہے جس سے نمٹنے کے لئے ریسرچ اینڈ دویلپمنٹ کے شعبہ کو مستحکم کیا جائے اور بیج فراہم کرنے والی کمپنیوں کو فری ہینڈ دینے کے بجائے ریگولیٹ کیا جائے۔ انھوں نے کہا کہ اس سے قبل متعدد زرعی پیکج ناکام ہو چکے ہیں اس لئے اسکی کامیابی کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات کئے جائیں۔

مزید :

کامرس -