ریلوے حادثات میں اضافے پرملازمین کااحتجاج

ریلوے حادثات میں اضافے پرملازمین کااحتجاج

  

ملتان (نمائندہ خصوصی) ریلوے میں پے در پے ہونے والے حادثات (بقیہ نمبر38صفحہ7پر)

پر ملازمین بھڑک اٹھے،ریلوے سمپارس یونین کے عہدیداران اسلم خان اور دیگر کا کہنا تھا کہ شالیمار کے مال بردار گاڑی سے ٹکرانے کا حادثہ انتہائی افسوسناک ہیآئے روز ہونیوالے حادثات کی وجہ سے ریلوے کے محفوظ سفر کے تاثر کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچا ہے لیکن ہر حادثے کے بعد انسانی غلطی کے نام پر کبھی ڈرائیور، کبھی اسٹیشن ماسٹرز، گارڈز یا دیگر ملازمین پر ڈال کر سسٹم کی خامیوں پر پردہ ڈالا جاتا ہے کی وجہ سے حادثات معمول بنتے جارہے ہیں جیٹھہ بھٹہ میں ہونیوالے حادثے سے متعلق بھی انتظامیہ کا یہی رویہ دیکھنے میں آ رہا ہے ملازمین کی مجرمانہ غفلت کی حمایت نہیں کرتے لیکن جیٹھہ بھٹہ اسٹیشن پر جو آل ریل انٹر لاکنگ سسٹم موجود ہے وہ اپنی مدت پوری کر چکا ہے اور اس سسٹم میں خرابیاں معمول بن چکی ہیں حادثات کے تدارک کے لئے جرات مندانا فیصلے کرنا ہونگے حادثات کی انکوائریوں میں انسانی غلطیوں کے ساتھ ساتھ سسٹم میں موجود خامیوں کو بھی سامنے لا کر مستقل حل کی منصوبہ بندی کرنا ہوگیاس حادثے کی وجہ سے ابتدائی طور ہر ڈی ٹی او ملتان نصیر احمد نیازی کو معطل کیا گیا ہے نصیر نیازی ایک قابل، محنتی اور ایماندار افسر ہیں جنہوں نے کچھ ہی عرصہ میں محنت سے ملتان ڈویڑن ٹرانسپورٹیشن ڈیپارٹمنٹ میں بنیادی اصلاحات کا عمل شروع کیا ہے اس موقع پر انہیں معطل کرنا ادارے اور ڈویڑن کے حق میں بہتر نہیں ہوگا مْستقل حل کے لیے نصیر نیازی کو بطور ڈی ٹی او ملتان مزید وقت دیئے جانے کی ضرورت ہے اس کے علاوہ سمپارس یونین حادثے کی غیر جانب دارانہ انکوائری اور انکوائری کی مکمل رپورٹ پبلک کرنے کا مطالبہ کرتی ہے تاکہ نتائج کو بنیاد بنا کر سسٹم میں اصلاحات سے متعلق بہتر فیصلے کیے جا سکیں۔

ریلوے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -