سعودی عرب میں کورونا کی دوسری لہر سے متعلق حکومت کا اہم بیان سامنے آگیا

سعودی عرب میں کورونا کی دوسری لہر سے متعلق حکومت کا اہم بیان سامنے آگیا
سعودی عرب میں کورونا کی دوسری لہر سے متعلق حکومت کا اہم بیان سامنے آگیا

  

ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن) سعودی وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں کورونا پھیل رہا ہے، تاہم ابھی تک سعودی عرب میں وبا کی دوسری لہر نہیں آئی۔

مقامی اخبار نوائے وقت کے مطابق ترجمان سعودی وزات صحت  ڈاکٹر محمد العبد العالی کا کہنا تھا کہ سعودی عرب میں کورونا متاثرین کی تعداد کبھی بڑھ رہی ہے تو کبھی کم، ملک میں کرونا کی دوسری لہر نہیں آئی اور وبا کے خاتمے کا کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں کورونا کے خاتمے کی حتمی رائے یا تاریخ سامنے نہیں آئی، مملکت میں انتہائی نگہداشت کے پچاس فیصد مریضوں کی عمریں 60 برس سے زیادہ ہیں، جن میں بیشتر لاعلاج امراض میں مبتلا ہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ سعودی ہسپتالوں اور ہیلتھ سینٹرز میں صحت انتظامات اعلیٰ درجے کے ہیں، کورونا علامات کی موجودی پر شہری فوری طور پر ڈاکٹرز سے رجوع کریں، بچوں کی ویکسین بھی وقت پر لگوائیں، پانچ لاکھ سے زیادہ افراد ’تاکد سینٹرز‘ اور ’تطمن کلینکس‘ سے خدمات حاصل کرچکے ہیں۔خیال رہے کہ خصوصی قائم کردہ تاکد سینٹرز اور تطمن کلینکس میں ملکی وغیرملکیوں کے کورونا ٹیسٹ کیے جاتے ہیں۔

سعودی وزارت صحت کے ترجمان کابیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب گزشتہ روز مملکت میں مریضوں کی تعداد دو لاکھ سے تجاوز کرگئی ہے۔ 

گزشتہ روز بی بی سی نے اپنی ایک رپورٹ میں کہا تھا کہ پچھلے مہینےخطہ  عرب کی دو بڑی معیشتوں (سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات)میں مکمل طور پر کرفیو اٹھائے جانے کے بعد نئے متاثرین کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ مارچ کے وسط سے ہی دونوں ممالک میں پابندیاں عائد تھیں اور پابندیاں اٹھائے جانے کے بعد تجارت، کاروبار اور عوامی مقامات کو دوبارہ کھولنے کا موقع ملا ہے۔

 جمعے اور ہفتے کو بھی مملکت میں 4100 سے زیادہ مریض رپورٹ ہوئے جس کے بعد سعودی عرب میں متاثرین کی مجموعی تعداد 205،929 ہوگئی ہے۔مملکت میں اب تک کورونا وائرس سے 1858 اموات ہو چکی ہیں۔

یومیہ متاثرین کی تعداد میں پہلی بار جون کے وسط میں 4000 سے زیادہ کا اضافہ ہوا لیکن اب اس تعداد میں کمی آ رہی ہے۔

سعودی عرب میں چھ خلیجی ریاستوں کے مقابلے میں سب سے زیادہ کورونا متاثرین موجود ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -عرب دنیا -کورونا وائرس -