آئی جی پنجاب پولیس اپنی ہی فورس سے مطمئن نہیں

آئی جی پنجاب پولیس اپنی ہی فورس سے مطمئن نہیں
آئی جی پنجاب پولیس اپنی ہی فورس سے مطمئن نہیں

  



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)انسپکٹر جنرل(آئی جی) پولیس پنجاب حاجی حبیب الرحمٰن کا کہنا ہے کہ وہ اپنی فورس کے کارگردی کے مطمئن نہیں اور اس کے بہتری کے لئے تمام ضروری اقدمات کر رہے ہیں۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آئی جی پنجاب کا کہنا تھا کہ جی ایم ٹیوٹا کا قتل ٹارگٹ کلنگ نہیں بلکہ ڈکیتی مزاحمت ہے جبکہ ڈاکٹر شبیہ الحسن اور جواد نقوی کا قتل فرقہ واریت کا نتیجہ ہے۔ انکا کہنا تھا کہ پولیس بنک اور جیولری شاپس کی ڈکیتیوں کے ملزمان کو جلد میڈیا کے سامنے پیش کر دے گی اور جب بھی صوبائی دارالحکومت میں جرائم کی شرح بڑھتی ہے تو اس کا اثر پورے صوبے پر پڑتا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا کہ عاصمہ جہانگیر کو سپیشل گاڑی اور رینجرز و پولیس کے 8اہلکار حفاظت کے لیے دے دیے ہیں۔

مزید : لاہور