بجٹ میں زرعی مداخل، زرعی ادویات اوربجلی پر کوئی سبسڈی نہیں دی گئی

بجٹ میں زرعی مداخل، زرعی ادویات اوربجلی پر کوئی سبسڈی نہیں دی گئی

  



لاہور(کامرس رپورٹر) کسان بورڈ پاکستان نے حالیہ مرکزی بجٹ پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ زرعی مداخل، زرعی ادویات بجلی پر کوئی سبسڈی نہیں دی گئی جب تک حکمران زراعت کو اپنی ترجیحات میں پہلے نمبر پر نہیں رکھیں گے اس وقت تک ملکی معیشت میں کبھی بہتری نہیں آسکتی۔ مرکزی صدر سردار ظفر حسین خان نے کاشت کاروں کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ زراعت ہی کی بدولت صنعتوں کا پہیہ رواں دواں ہے۔ حکومت اپنی ترجیحات کا ازسرنو تعین کرے اور ملک کی دو تہائی آبادی جس کا دارومدار بالواسطہ یا بلاواسطہ زراعت کے شعبہ سے ہے اسے نظرانداز کرنا اور اس شعبہ کی ترجیحات میں شامل نہ کرنا سماجی اور معاشی اعتبار سے بھی قابل مذمت ہے۔ اعدادوشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت کی ترقیاتی حکمت عملی بھی ناقص ہے اور اس کی ترجیحات بھی صحیح نہیں۔ انھوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ زرعی ادویات، زرعی مداخل بجلی، پٹرول، ڈیزل پر کاشت کاروں کو مناسب سبسڈی دی جائے تاکہ وہ مشکل حالات کا مقابلہ کر سکیں۔

مزید : کامرس


loading...