حکومت طالبان سے دوبارہ امن مذاکرات شروع کرے ، لیاقت بلوچ

حکومت طالبان سے دوبارہ امن مذاکرات شروع کرے ، لیاقت بلوچ

  



 پشاور (آئی این پی )جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ حکومت طالبان کے ساتھ امن مذاکرات کو دوبارہ شروع کرے یہ ملک و قوم کے مفاد میں ہے۔ جنگ مسائل کا حل نہیں بلکہ اس سے مسائل بڑھتے ہیں۔ قبائلی عوام پاکستان کے شہری اور محب وطن ہیں۔ غلط پالیسیوں کی وجہ سے قبائلی عوام میں احساس محرومی بڑھ گیا ہے ۔کشمیر کو آزاد کرانے میں قبائلیوں کا کردار ناقابل فراموش ہے۔ قبائلی علاقوں میں بھی بلدیاتی انتخابات کرائے جائیں۔ان خےالات کا اظہار المرکز اسلامی میں جماعت اسلامی حلقہ قبائل کے ذمہ داران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کےا۔ اجلاس میں جماعت اسلامی پاکستان کے نائب امیر میاں محمد اسلم ، جماعت اسلامی خیبر پختونخوا کے امیر پروفیسر محمد ابراہیم خان ، جماعت اسلامی حلقہ قبائل کے امیر صاحبزادہ ہارون الرشید ، سیکرٹری جنرل ڈاکٹر منصف خان ، نائب امیر زرنور آفریدی و دیگر ذمہ داران بھی موجود تھے۔ جماعت اسلامی کے مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے مزید کہا کہ قبائلی علاقوں میں امریکہ کے اشاروں پر آپریشن شروع کرکے امن و امان کو تباہ کیا گیا۔ اس آپریشن کے اثرات پورے ملک میں محسوس کئے جارہے ہیں۔ قبائلی عوام کو اعتامد میں لے کرقبائلی روایات کے مطابق جرگوں کے ذریعے مسائل کا حل نکالا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی پاکستان مطالبہ کرتی ہے کہ مزید آپریشن بند کرکے قبائلی عوام کے زخموں پر مرحم رکھا جائے اور امن مذاکرات کو برقراراور مو¿ثر کیا جائے۔ تمام قبائلی متاثرین کو خصوصی مالی پیکج دیا جائے اور متاثرہ خاندانوں کو باعزت طور پر اپنے گھروں کو منتقل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ لاپتہ قبائلی افراد کو بازیاب کراکر فوری طور پر عدالتوں کے سامنے پیش کیا جائے اور تمام بے گناہ قبائلی فی الفور رہا کئے جائیں۔

لیاقت بلوچ

مزید : علاقائی


loading...