حکومت کا بجٹ میں امپورٹ ایکسپورٹ بینک کا قیام خوش آئند ہے ،صنعت کار

حکومت کا بجٹ میں امپورٹ ایکسپورٹ بینک کا قیام خوش آئند ہے ،صنعت کار

  



                                              لاہور(کامرس رپورٹر)ٹیکسٹائل اور ریڈی میڈ گارمنٹس سیکٹر سے تعلق رکھنے والے صنعت کاروں نے نئے مالی سال کے بجٹ میں حکومت کی جانب سے امپورٹ ایکسپورٹ بنک کے قیام کو خوش آئند قرار دیا ہے اور وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار سے درخواست کی ہے کہ وہ فوری طور پر اس بنک کو قائم کریں تاکہ صنعتی و تجارتی سرگرمیاں بڑھانے اور برآمدات میں اضافے کیلئے امپورٹ ایکسپورٹ بنک سے سستے قرضے حاصل کئے جا سکیں ۔یہ بات اپٹما پنجاب کے چیئرمین ایس ایم تنویر،گروپ لیڈر گوہر اعجاز،شہزاد اعظم خاں اور پاکستان ٹینریز ایسوسی ایشن کے سابق چیئرمین آغا سیدین نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ان صنعت کاروں کا کہنا تھا کہ امپورٹ ایکسپورٹ بنک کا قیام وقت کی ضرورت ہے اورحکومت نے بجٹ میں اس کے قیام کا اعلان بروقت کیا ہے ۔اس بنک کا ابتدائی ادا شدہ سرمایہ 10ارب روپے ہو گا جسے بڑھا کر 100ارب کر دیا جائے گا ۔اس بنک کے ذریعے ٹیکسٹائل سیکٹر کے مینوفیکچررز اور ایکسپورٹرز کو طویل المیاد بنیادوں پر 9فیصد اور مختصر مدت کیلئے 7.5فیصد پر قرضے ملیں گے جس سے ٹیکسٹائل سیکٹر میں نئی مشینری درآمد کی جائے گی اور ریڈی میڈ گارمنٹس سیکٹر کو جدید بنیادوں پر استوار کیا جائے گا ۔ان صنعت کاروں کا کہنا تھا کہ حکومت ایکسپورٹ ڈویلپمنٹ فنڈ کی فوری تنظیم نو کرے کیونکہ اس وقت اس فنڈ میں اربوں روپے پڑے ہوئے ہیں لیکن یہ فنڈ جن شعبوں سے لیا جاتا ہے ان کی ترقی پر خرچ نہیں کیا جاتا لہٰذا ایکسپورٹ ڈویلپمنٹ فنڈ کی تنظیم نو کے وقت اس بات کا خیال رکھا جائے کہ جس شعبے سے جتنی رقم لی جائے وہ اس شعبے کی ترقی پر خرچ کی جائے۔

مزید : علاقائی


loading...