میڈیا کے ضابطہ اخلاق میں ابہام دور کرنے کےلئے 6رکنی کمےٹی قائم

میڈیا کے ضابطہ اخلاق میں ابہام دور کرنے کےلئے 6رکنی کمےٹی قائم

  



 لاہور ( این این آئی) حکومت نے میڈیا کےلئے ضابطہ اخلاق میں ابہام دورکرنے اور اس سلسلے میں ایک موثر لائحہ عمل وضع کرنے کےلئے 6رکنی کمےٹی قائم کردی ہے،جس کے چیئرمین مشیر وزیراعظم عرفان صدیقی ہونگے۔ یہ بات بدھ کے روزیہاں پنجاب یونیورسٹی میں منعقدہ کانفرنس میں وزیر اعظم کے مشیر عرفان صدیقی کی طرف سے تحریری پےغام میں بتائی گئی۔ ایڈےشنل سیکرٹری وزارت اطلاعات ونشریات محمد اعظم نے مشیر وزیر اعظم عرفان صدیقی کی نمائندگی کرتے ہوئے بتایا کہ موجودہ حکومت میڈیا کی آزادی کو آئین پاکستان کے مطابق یقینی بنانے کےلئے پر عزم ہے اور ضابطہ اخلاق کی تیاری کےلئے تمام سٹیک ہولڈرز کےساتھ مشاورت کرےگی اور اسی مقصد کےلئے پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات میں کانفرنس کاانعقاد کیا گیا ہے۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی اے رحمان نے کہا کہ میڈیا کو اپنی آزادی ضرور برقرار رکھنی چاہیے تاہم انہوںنے اس آزادی کے ساتھ ذمہ داری کا مظاہرہ بھی کرنا چاہیے۔ڈاکٹر مہدی حسن نے کہا کہ ورکنگ جرنلسٹ کےساتھ ضابطہ اخلاق کی تیاری میں مشاورت ضروری ہے،تاہم انہوںنے کہا کہ میڈیا کو کسی اےجنڈے کی پیروی سے گریز کرنا چاہیے۔ایڈےشنل اٹارنی جنرل نصیر احمد بھٹہ نے کہا کہ صحافیوں کو خود احتسابی کی عادت اپنانا ہو گی اور چینلز کا ایجنڈہ عوام کی فلاح و بہبود ہونا چاہیے۔وزارت اطلاعات ونشریات کے تعاون سے منعقد ہونیوالی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر مجاہد منصوری نے کہا کہ اظہار رائے کے موقع پر سماجی ذمہ داری اور قومی مفاد کو مدنظر رکھنا وقت کی اہم ضرورت ہے، جبکہ ضابطہ اخلاق کی تیاری کے وقت عام آدمی کی رائے کو بھی رکھا جانا چاہیے۔کانفرنس سے ڈاکٹر نوشینہ سلیم، کرنل(ر) اکرام اللہ،سہیل ریاض اور وائس چانسلرپنجاب یونیورسٹی پروفےسر ڈاکٹر مجاہد کامران نے بھی خطاب کیا ۔کانفرنس میںشعبہ صحافت سے تعلق رکھنے والے تجزیہ کاروں، معروف دانشورروں نے خطاب کیا اور صحافت کے طلبہ سمیت پی اےچ ڈی سکالرز نے بھی اپنی اپنی تجاویز دیں۔

عرفان صدیقی

مزید : صفحہ اول


loading...