حافظ آباد، پسند کی شادی کرنیوالی 18سالہ لڑکی معجزانہ طور پر نہر سے زندہ بچ نکلی

حافظ آباد، پسند کی شادی کرنیوالی 18سالہ لڑکی معجزانہ طور پر نہر سے زندہ بچ ...

  



 حافظ آباد(ڈسٹرکٹ رپورٹر)حافظ آبادمیں پسند کی شادی کرنے والی 18 سالہ لڑکی کو گولیاں مار کر نہر میں پھینک دیاگیا،لڑکی معجزانہ طور پر نہر سے زندہ بچ نکلی ٗپولیس تھانہ صدر نے لڑکی کے والد ،بھائی سمیت 4افراد کیخلاف مقدمہ درج کر لیا۔افتخار کالونی کھیالی بائی پاس گوجرانوالہ کی صبامقصود نے میڈیا کو بتایا کہ اس نے پانچ روز قبل قیصر نامی رشتہ دار سے پسند کی شادی کی جس پر اس کے والد مقصود احمد،بھائی فیصل اور دیگر رشتہ دار خوش نہ تھے۔صبا مقصود کا کہنا ہے کہ شادی سے ناخوش ان کے گھروالوں نے اسے گولیاں ماریں، چہرے اور ہاتھ پر گولیاں لگنے سے وہ شدید زخمی ہو گئی۔ گھر والوں نے اسے مردہ سمجھ کر بوری میں بند کرکے نہر جھنگ برانچ میں پھینک دیا لیکن وہ معجزانہ طور پر نہر سے بچ نکلی۔ ریسکیو1122اور صدر پولیس نے اسے شدید زخمی حالت میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال منتقل کر دیا۔ پولیس نے متاثرہ لڑکی کے والد مقصود احمد، بھائی فیصل، چچا اشفاق احمد اور چچی ساجدہ بی بی کیخلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر