ضروری ڈیٹا بچانے کیلئے ’ٹیڑھے میڑھے‘ پاس ورڈ بن گئے

ضروری ڈیٹا بچانے کیلئے ’ٹیڑھے میڑھے‘ پاس ورڈ بن گئے
ضروری ڈیٹا بچانے کیلئے ’ٹیڑھے میڑھے‘ پاس ورڈ بن گئے

  



نیویارک (نیوز ڈیسک) موبائل فون اور کمپیوٹروں کے پاس ورڈ چوری ہو جانا کسی بھی شخص یا کمپنی کیلئے بے حد نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے اور اس مسئلہ کے حل کیلئے امریکی سائنسدانوں نے پاس ورڈ لگانے کا ایک دلچسپ طریقہ ڈھونڈ لیا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ نمبر یا الفاظ استعمال کرنے کی بجائے اب آپ سکرین پر کسی بھی قسم کی ٹیڑھی میڑھی لکیریں کھینچ کر انہیں اپنے پاس ورڈ کے طور پر استعمال کر سکتے ہیں۔ یہ لکیریں آپ ایک یا اس سے زائد انگلی کو بیک وقت استعمال کر کے بھی کھینچ سکتے ہیں۔ اگر آپ کا پاس ورڈ نمبروں یا الفاظ کی صورت میں ہے تو آپ کو یہ پاس ورڈ درج کرتے وقت دیکھ کر کوئی بھی اسے یاد رکھ سکتا ہے اور بعد ازاں اسے استعمال کر کے سخت نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔ رجرز یونیورسٹی کے سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ ان بے ڈھنگی لکیروں کو اگر کوئی دیکھ بھی لے تو اس کیلئے ان کی نقل کرنا آسان نہیں اور اس طریقہ سے آپ کا پاس ورڈ بہت محفوظ ہو جائے گا۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی


loading...