اپوزیشن اپنی بقاء کے لئے بجٹ پرتنقیدکررہی ہے،ایمانداری کے ساتھ انتخابی منشورپرعملدرآمدکررہے ہیں:اسحاق ڈار

اپوزیشن اپنی بقاء کے لئے بجٹ پرتنقیدکررہی ہے،ایمانداری کے ساتھ انتخابی ...
اپوزیشن اپنی بقاء کے لئے بجٹ پرتنقیدکررہی ہے،ایمانداری کے ساتھ انتخابی منشورپرعملدرآمدکررہے ہیں:اسحاق ڈار

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیرخزانہ سینیٹر اسحاق ڈارنے کہاہے کہ اپوزیشن اپنی بقاء کے لئے بجٹ پرتنقیدکررہی ہے ،غیرملکیوں کونہیں پاکستانیوں کوہی ٹیکس دیناہوگا،2018-19ء کابجٹ نگران حکومت کوپیش کرنے کاموقع نہیں دیں گے ۔

نجی ٹی وی ’’ڈان نیوز ‘‘ کے پروگرام ’’دوسرا رخ ‘‘ میں گفتگوکرتے ہوئے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ اپوزیشن نے اپنی بقا کے لئے کچھ نہ کچھ تو کہنا ہے ،آپ عوام سے بجٹ کے بارے میں پوچھیں جن کے لئے سب کچھ کیا گیا ہے وہ سب اس عوامی بجٹ پر خوشیاں منا رہے ہیں ،پاکستان دیولیہ ہونے کی طرف جا رہا تھا ہم نے اس کو ریسکیو کرنا تھا ،ہماری عادت ہے کہ ہم صرف تنقید کرتے ہیں ،اللہ کا شکر ادا نہیں کرتے ،اپوزیشن یہ تو نہیں کہے گی کہ بہت اچھا بجٹ تھا ،کوئی بھی چیز نہ ایک سال میں خراب ہو تی ہے نہ ٹھیک ہوتی ہے ،لو ٹارگٹ رکھیں تو پھر بڑی واہ واہ ہوتی ہے ،پچھلے بجٹ میں سے ایسی کون سی بات ہے جو ہم نے پوری نہیں کی ، انہوں نے کہاکہ بے روزگاری کے خاتمے کیلئے 7فیصدجی ڈی پی گروتھ چاہئے،2015ء اور2016ء کے پاکستان میں واضح فرق ہے ،پرویزمشرف نے 22دن اورپی پی نے 3دن میں ودہولڈنگ ٹیکس واپس لیا،ہم نے ابھی تک ود ہولڈنگ ٹیکس کو رول بیک نہیں کیا ،کسان پیکج نہیں ہوتاتوزرعی ترقی مزیدبری طرح متاثرہوتی ،تنخواہوں میں اضافے سے 13لاکھ سرکاری ملازمین کوفائدہ ہوگا۔انہوں نے کہاکہ پی آئی اے کی نجکاری پراپوزیشن کااعتمادمیں لیاہے ،پی آئی اے کی سابقہ ساکھ کوبحال کرناچاہتے ہیں ،ایمانداری کے ساتھ انتخابی منشورپرعملدرآمدکررہے ہیں ،مزید2بجٹ پیش کریں گے اور 2018-19ء کابجٹ نگران حکومت کوپیش کرنے کاموقع نہیں دیں گے۔

مزید : قومی /اہم خبریں