کسانوں کو 7کھرب روپے کے قرضے دیے جائیں گئے: سکندرحیات بوسن

کسانوں کو 7کھرب روپے کے قرضے دیے جائیں گئے: سکندرحیات بوسن

ملتان( اے این این ) وفاقی وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکیورٹی ملک سکندر حیات بوسن نے کہا ہے کہ کچھ لوگ وزیراعظم کو ملزم سے مجرم بنانا چاہتے ہیں ،ان کی یہ خواہش کبھی پوری نہیں ہوگی ، وفاقی بجٹ میں کسانوں کو ان کی جہدوجہد کا پھل ملا ہے جبکہ اپوزیشن کے منہ بھی بند ہوگئے۔ ملتان پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر سکندر حیات بوسن کا کہنا تھا کہ حکومت نے کسانوں کے مسائل کو اپنے مسائل سمجھ کر بجٹ میں خصوصی ہدایت کی تھی جس پر اتنا ریلیف ملا،بجلی کے ریٹ اتنے کم کرنے پر اپوزیشن کے منہ بند ہو گئے تھے وہ خود حیران تھے،ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کسان کی پیداواری قیمت زیادہ ہے اس لیے یہاں پر کسان زوال پذیر ہے ،کپاس کی پیدوار کم ہونے کی وجہ سے اتنا نقصان ہوا ایک سوال کئے جواب میں ان کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں 6.4ملن ٹن یوریا کی پیدوار ہے جس پر حکومت 400 روپے فی بوری قیمت میں کمی سے خود اندازہ لگا لیں کم حکومت کسانوں کے ساتھ اس سال کتنی مخلص ہے ،کسانوں کو اس مرتبہ 700 ارب روپے کے قرض دئیے جائیں گئے، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ نواز شریف ہوں یا یوسف رضا گیلانی سب کا بلا امتیاز احتساب ہونا چاہیے ،یہ نہیں کہ صرف ایک شخص کو ٹارگٹ کیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ کچھ لوگ میاں نوازشریف کو ملزم سے مجرم ثابت کرنا چاہتے ہیں مگران کی یہ خواہش کبھی پوری نہیں ہوسکتی کیونکہ نوازشریف کا اپنا دامن صاف ہے ۔

مزید : کامرس