شام، الرقہ میں بڑی عسکری کارروائی، بمباری سے 36جنگجو ہلاک

شام، الرقہ میں بڑی عسکری کارروائی، بمباری سے 36جنگجو ہلاک

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


انقرہ/دمشق(ن این آئی)شامی فوج نے ترک سرحد کے قریب واقعے شہر الرقہ کی ناکہ بندی کرنے کے لیے ایک بڑی عسکری کارروائی کا آغاز کر دیا ۔ اس شہر کو شدت پسند تنظیم داعش اپنی خودساختہ خلافت کا دارالحکومت قرار دیتی ہے۔ دوسری جانب کرد فورسز بھی امریکی جنگی طیاروں کی مدد سے شمال کی جانب سے الرقہ کی جانب بڑھ رہی ہیں۔ادھر ترک فوج نے بھاری توپ خانے کی مدد سے شمالی شام میں جہادیوں کی پوزیشینوں کو نشانہ بنایا ان حملوں میں کم از کم 36عسکریت پسند مارے گئے جبکہ جہادیوں کے متعددمحفوظ ٹھکانوں کو بھی تباہ کردیاگیا،غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایک بیان میں شامی تنازعے پر نگاہ رکھنے والی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے سربراہ عبدالرحمن رامی نے بتایا کہ شامی فورسز روسی جنگی طیاروں کی مدد سے الرقعہ شہر کے مشرق میں اِثریا جب کہ دوسری جانب طبقہ شہروں کی جانب بڑھ رہی ہیں، تاکہ اس شہر کا حلب کے ساتھ زمینی راستہ منقطع کیا جا سکے۔ طبقہ شہر پر داعش کا قبضہ ہے۔ دوسری جانب کرد فورسز بھی امریکی جنگی طیاروں کی مدد سے شمال کی جانب سے الرقہ کی جانب بڑھ رہی ہیں۔شامی فورسز حکومت کے حامی جنگجوؤں اور روسی جنگی طیاروں کے تعاون سے مسلسل پیش قدمی کر رہی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ شامی فورسز اب داعش کے زیر قبضہ شہر طبقہ سے صرف 40 کلومیٹر دور ہیں، جب کہ الرقہ اور حلب کو ملانے والی سڑک بھی اب شامی فورسز نے قبضے میں لے لی ۔شامی تنازعے پر نگاہ رکھنے والی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق یہ بات واضح ہے کہ ایک طرف شمال سے کرد فورسز امریکی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کے طیاروں کی مدد سے آگے بڑھ رہی ہیں، جب کہ دوسری جانب شامی فورسز نے بھی روسی فضائی مدد کے ذریعے اسلامک اسٹیٹ پر اپنے دباؤ میں خاطر خواہ اضافہ کر دیا ہے۔آبزرویٹری کے سربراہ رامی عبدالرحمان کے مطابق اس علاقے میں اب بہت تھوڑا حصہ جہادیوں کے قبضے میں ہے اور وہ زیادہ تر علاقے سے پسپا ہو چکے ہیں یا ہوتے جا رہے ہیں۔ادھر ترک فوج نے بھی کہا کہ اس نے بھاری توپ خانے کی مدد سے شمالی شام میں جہادیوں کی پوزیشینوں کو نشانہ بنایا ۔ ترک فوج کے بیان کے مطابق ان حملوں میں کم از کم 36 عسکریت پسند مارے گئے ہیں۔ وقفے وقفے سے ترک فورسز بھی سلامک اسٹیٹ کی عسکری تنصیبات کو بھاری توپ خانے کی مدد سے نشانہ بنانے کا کام جاری رکھے ہوئے ہے۔

مزید :

عالمی منظر -