جامعہ اسلامیہ بہاولپور ، عباسیہ کیمپس کے سامنے قلم اور کتاب پرمبنی یاد گار علم کا افتتاح

جامعہ اسلامیہ بہاولپور ، عباسیہ کیمپس کے سامنے قلم اور کتاب پرمبنی یاد گار ...

بہاولپور( بیورورپورٹ)انجینئر بلیغ الرحمن وزیر مملکت برائے تعلیم و امور داخلہ ،پروفیسر ڈاکٹر قیصر مشتاق وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور ،ثاقب ظفر کمشنر بہاول پور اور ڈاکٹر احسان صادق ریجنل پولیس آفیسر بہاول پور نے عباسیہ کیمپس کے سامنے یونیورسٹی چوک میں قلم اور کتاب پر مبنی یادگارِعلم کا (بقیہ نمبر39صفحہ7پر )

افتتاح کردیا۔ اس موقع پر بہاول پور چیمبر آف کامرس کے صدر ظفر شریف، سٹیزن پولیس لائیزان کمیٹی کے سربراہ رانا محمد طارق، ڈینز، اساتذہ کرام ، سول سوسائٹی اور میڈیا کیور طلبہ وطالبات موجود تھے۔اسلامیہ یونیورسٹی بہاول پور اور ضلعی حکومت بہاول پور کے اشتراک سے تعمیر کردہ یادگارِعلم کو نواب آف بہاول پور سر صادق محمد خان عباسی پنجم سے منسوب کیاگیا اور قلم اور کتاب کے ماڈل پر مبنی ڈیزائن ان کی علم دوستی اور شاندار تعلیمی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتا ہے یہ یادگار پروفیسر ڈاکٹر قیصر مشتاق وائس چانسلر کی خصوصی سرپرستی اور نگرانی میں تیار کی گئی، اساتذہ اور طلباء نے مختلف ڈیزائن تیار کیے انجینئر محمد بلیغ الرحمن وزیر مملکت نے کہا کہ یہ یادگار بہاول پور کی خوب صورتی میں ایک نیا اضافہ ہے ۔ضلعی انتظامیہ ، اسلامیہ یونیورسٹی اور دیگر ادارے تاریخی شہر بہاول پور کی عظمت رفتہ کی بحالی کے لیے کوشاں ہیں جو لائق تحسین ہے۔ ۔ بہاول پور کے تاریخی تعلیمی اداروں کے سنگم یونیورسٹی چوک میں قلم اور کتاب کی حرمت کی آئینہ دار یادگار بہت دلفریب اضافہ ہے ۔انہوں نے اس یادگار کی تعمیر پر پروفیسر ڈاکٹر قیصر مشتاق وائس چانسلر اور کمشنربہاول پور ثاقب ظفر کو مبارک باد دی ۔انہوں نے پرنسپل یونیورسٹی کالج آف آرٹ اینڈ ڈیزائن ڈاکٹر نصر اللہ خان ناصر ، فیکلٹی ممبر علی نعیم اور طالب علم نصر فرید کی کاوشوں کوسراہا۔ بہاول پور کی تعلیمی ترقی کے لیے حکومتی اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گورنمنٹ صادق کالج ویمن یونیورسٹی بہاول پور کے لیے سوا سو ایکٹر زمین مختص کردی گئی ہے ، بہاول پور ویٹرنری یونیورسٹی پر کام جاری ہے اور بہاول پور انسٹیٹیوٹ آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے قیام کے لیے تیزی سے مراحل طے کیے جارہے ہیں ۔ دریں اثنا اساتذہ ،طلبہ وطالبات اور عام شہری یونیورسٹی چوک پرقائم کی گئی یادگار کو دیکھنے کے لیے بڑی تعداد میں آرہے ہیں اور یونیورسٹی و ضلعی انتظامیہ کی مشترکہ کوشش کو سراہ رہے ہیں ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر