لیڈی ہیلتھ وزکرز کی انٹر ویولسٹ میں ہیرا پھیری کی گئی

لیڈی ہیلتھ وزکرز کی انٹر ویولسٹ میں ہیرا پھیری کی گئی

ٹانک(بیوروچیف )محکمہ صحت ٹانک کی جانب سے لیڈی ہیلتھ ورکر کیلئے دسمبر2015 ٹسٹ اور انٹرویوکے لسٹوں میں ہیرا پھیری کی گئی ہے من پسند اور نا اہل خواتین امیدواروں کو لسٹ میں شامل جبکہ اہل اور انٹرویو میں ٹاپ پوزیشن خواتین کو لسٹ سے نکال کر میرٹ کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں شادی شدہ عورتوں کی بجائے جعلی نکاح ناموں سے غیر شادی شدہ کوتر جیح دی گئی ہے جو کہ پالیسی کی سراسر خلاف ورزی ہے ایم اے ،بی اے پاس خواتین پر مڈل پاس خواتین کوتر جیح دینا کہاں کا انصاف ہے صو بائی وزیرصحت لیڈی ہیلتھ ورکریونین کو نسل گرہ بلوچ ٹانک کے جاری شدہ لسٹ پر نظر ثانی کرے بصورت دیگر عدالت جانے سے گریز نہیں کرینگے تفصیلات کے مطا بق فیلڈپروگرام افسرخرم شہزاد کابی ایچ یو گرہ بلوچ میں لیڈی ہیلتھ ورکر انٹرویو لسٹوں کی ویری فیکشن کے موقع پر متعدد خواتین امیدواروں نے احتجاج کرتے ہو ئے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تبدیلی کے دعویداروں نے تبدیلی لا دی ماسٹر ڈگری ہولڈر کے جگہ میڈل پاس لڑکیوں کو بھرتی کیا جا رہا ہے میرٹ کی کھلم کھلا خلاف ورزی اور ہمارے ساتھ زیادتی ہے انٹرویو جو کہ14دسمبر 2015کو ہوئی تھی 6مہینے بعد 50کا میاب امیدواروں کی لسٹ جاری کی گئی تھی ان کا کہنا تھا کہ ڈسپلے لسٹ میں ہم میر ٹ کے لحاظ سے ہم ٹاپ پر ہے مگر اندرونی ملی بھگت سے لسٹوں میں ہیرا پھیری کی گئی ہے جس میں پسند اور نا اہل اور مڈل پاس امیدواروں کو لسٹ میں شامل کیا گیا ہے جبکہ ایم اے اور بی اے پاس اور شادی شدہ امیدواروں کو لسٹ سے خارج کر کے میرٹ کی دھجیاں اڑائی گئی ہیں اور پالیسی کی سراسر خلاف ورزی ہے ان کا کہنا تھا کہ ہم صو بائی وزیر صحت سے مطا لبہ کرتے ہیں کہ لیڈی ہیلتھ ورکر ٹانک گرہ بلوچ کے جاری شدہ لسٹوں میں ہیر ا پھیری کا نوٹس لے بصورت دیگر عدالت جانے سے گریز نہیں کرینگے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر