زکوٰة کے سرکاری نصاب نے ابہام پیدا کر دیا

زکوٰة کے سرکاری نصاب نے ابہام پیدا کر دیا
زکوٰة کے سرکاری نصاب نے ابہام پیدا کر دیا

  

کراچی (ویب ڈیسک) زکوٰة کے سرکاری نصاب نے ابہام پیدا کر دیا۔ چاندی کی فی تولہ قیمت مارکیٹ میں 748 روپے ہے۔ اس لحاظ سے شرعی نصاب یعنی ساڑھے 52 تولہ چاندی کی قیمت 39 ہزار 165 روپے ہے۔ جبکہ وزارت مذہبی امور کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے تحت زکوٰة کا نصاب 35 ہزار 557 روپے مقرر کیا گیا ہے جو 47 اعشاریہ 6 تولہ چاندی کی قیمت بنتی ہے۔ اس طرح حکومتی اعلان کے مطابق زکوٰة کے شرعی نصاب میں 3 ہزار 608 روپے یا تقریباً 5 تولہ چاندی کی کمی کر دی گئی ہے ۔ یا پھر چاندی کے مارکیٹ ریٹ سے 21 اعشاریہ 9 فیصد کم پر زکوٰة کا نصاب مقرر کیاگیا ہے۔ حکومت کی اس غلطی سے یکم رمضان کو بینکوں میں ان لوگوں کے کھاتوں سے بھی زکوٰة کی کٹوتی کی جائے گی جو صاحب نصاب نہیں ہیں۔ دوسری جانب بینکوں میں زکوٰة کی کٹوتی سے بچنے کیلئے کھاتہ داروں کی جانب سے کروڑوں روپے نکلوالیے گئے یا پھر زکوٰة سے کٹوتی سے استثنیٰ کے سرٹیفکیٹ جمع کرائے جارہے ہیں۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

روزنامہ امت کی رپورٹ کے مطابق وزارت مذہبی امور نے مارکیٹ قیمت کے مقابلے میں زکوٰة کا نصاب 3 ہزار 608 روپے کم مقرر کر دیا‘ جس سے کئی ایسے افراد جو صاحب نصاب نہیں ہونے کے باوجود ان کے اکاﺅنٹس سے زکوٰة منہا کی جائے گی۔ زکوٰة کا سرکاری نصاب 35 ہزار 557 جبکہ مارکیٹ ریٹ کے مطابق شرعی نصاب 39 ہزار 165 روپے بنتا ہے‘ وزارت مذہبی امور نے 9.21 فیصد کم ریٹ ظاہر کئے ہیں۔ اخبار کے مطابق شرعی اعتبار سے کسی بھی ایسے شخص پر زکوٰة کی ادائیگی واجب ہوتی ہے جس کے پاس کم از کم ساڑھے باون تولہ چاندی یا 7 تولہ سونا موجودہ تاہم ان دونوں میں سے کم از کم ریٹ والی کسی بھی چیز زکوٰة کی وصولی و ادائیگی کی جائے گی۔ اس اعتبار سے زکوٰة کی وصولی موجودہ دور میں سونے کی مہنگائی کی وجہ سے چاندی پر لی جائے گی جس کی وجہ سے شرعی اعتبار سے ساڑھے باون تولہ چاندی جتنی رقم رکھنے والے شخص پر زکوٰة واجب ہے ۔ پاکستان میں اس وقت64 روپے گرام چاندی کا ریٹ ہے۔ جبکہ ایک تولہ میں 11 گرام اور 650 ملین گرام آتے ہیں اس حساب سے ایک تولے چاندی کی رقم تقریباً 746 روپے بنتی ہے۔ اور ساڑھے 52 تولہ چاندی کی رقم تقریباً 39 ہزار 165 روپے بنتی ہے ۔ تاہم شرعی اعتبار سے 39ہزار 165 روپے رکھنے والا شخص صاحب نصاب ہو گا جبکہ وزارت مذہبی امور کی جانب سے گزشتہ روز جاری ہونے والے نوٹیفکیشن کے مطابق ہجری سال 1436.37 کیلئے زکوٰة کا نصاب 35 ہزار 557 روپے مقرر کیا گیا ہے۔ وزارت مذہبی امور نے 1436.37 ہجری کیلئے زکوٰة کیلئے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق 1980 ءکے زکوٰة عشر کے پہلے شیڈول کے سیریل نمبر ایک کالم دو میں دیئے گئے طریقہ کار کے مطابق 35557 روپے سے کم اکاﺅنٹ میں موجود رقم پر یکم رمضان المبارک کو کوئی زکوٰة نہیں کاٹی جائے گی۔ نوٹیفکیشن میں مزید کہا گیا ہے کہ پہلی رمضان المبارک کو چاند نظر آنے پر منحصر جو چھ اور سات جون کو ہو سکتا ہے۔ زکوٰة سیونگ یا اسی طرح کے دیگر ان اکاﺅنٹس سے منہاکی جائے گی جن میں 35557 روپے موجود ہوںگے۔ چاندی کے مارکیٹ قیمت کے اعتبار سے 3 ہزار 608 روپے (9.21 فیصد ) کم رکھی گئی ہے ۔ جس کی وہ سے ایسے شرعی اعتبار سے ایسے افراد بھی صاحب نصاب نہیں بنتے انہیں ان سے بھی زکوٰة کی وصولی کی جائے گی ۔ واضح رہے کہ حالیہ چند برسوں میں چاندی کے ریٹس میں نمایاں کمی کی وجہ سے زکوٰة میں بھی کمی واقع ہوئی ہے ۔ 2012 کے مقابلے میںامسال 20 ہزار 580 روپے (34.44 فیصد ) نصاب کم ہوا ہے۔ سال 2012 اور ہجری سال 1432.33 میں چاندی کی فی گرام قیمت 97 روپے 70 پیسے تھا جس کے حساب سے فی تولہ قیمت تقریباً ایک ہزار 138 روپے تھے جس کی وجہ سے ساڑھے 52 تولہ چاندی کی قیمت 59 ہزار 746 روپے بنتی تھی جس کی وجہ سے صاحب نصاب کیلئے زکوٰة کی ادائیگی 59 ہزار 165 روپے تھا۔مجموعی طورپر چاندی کے نمایاں ریٹس گرنے کی وجہ سے صاحب نصاب شرعی طور پر 39 ہزار 165 روپے کا مالک ہونا چاہیے جبکہ اس کے برعکس حکومت کے مطابق صاحب نصاب کیلئے رقم کا تناسب 35 ہزار 557 روپے مقرر کیا گیا ہے.

اس حوالے سے کراچی صراف جیولرز گروپ کے حاجی ہارون چاند کا کہناہے حالیہ چند برسوں میں عالمی منڈی میں بھی چاندی کے ریٹس مسلسل گرنے کی وجہ سے مندی کا رجحان ہے تاہم اب ملک بھر میں چاندی کا ریٹ 640 روپے فی 10 گرام مقرر ہے ۔ اس حوالے سے مفتی منیب الرحمن نے بتایا کہ شریعت کے مطابق ساڑھے 52 تولہ چاندی کے مالک شخص سے ہی زکوٰة وصول کی جائے گی اور چاندی کا ریٹ کیا ہے اس حوالے سے مارکیٹ سے رجوع کیا جائے گا۔ دوسری جانب زکوٰة کٹوتی سے بچنے کیلئے بینکوں سے کروڑوں روپے نکلوالیے گئے ہیں۔ یا پھر زکوٰة کٹوتی سے استثنیٰ کے سرٹیفکیٹس بھی جمع کرائے گئے۔ وزارت مذہبی امور نے رواں اسلامی سال کیلئے زکوٰة کا نصاب 35 ہزار 557 روپے مقرر کیا ہے جس کی یکم رمضان کو اس سے زائد رقم رکھنے والوں کے بینک اکاﺅنٹس سے ڈھائی فیصد زکوٰة کٹوتی ہو گی تاہم ہزاروں کھاتے اداروں نے کٹوتی سے بچنے کیلئے اپنی رقوم نکلوالی ہیں۔ واضح رہے کہ پاکستانی قوم کا شمار دنیا میں سب سے کم ٹیکس دینے والی اور سب سے زیادہ خیرات کرنے والی اقوام میں ہوتا ہے ۔ اکثریت حکومت پر عدم اعتماد کے باعث اپنی زکوٰة خود ہی ادا کرنے کو ترجیح دیتی ہے۔

مزید : کراچی