گل بخاری کے اغوا کے بعد معروف صحافی اسد کھرل پر بدترین تشدد

گل بخاری کے اغوا کے بعد معروف صحافی اسد کھرل پر بدترین تشدد
گل بخاری کے اغوا کے بعد معروف صحافی اسد کھرل پر بدترین تشدد

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف صحافی اسد کھرل کو رات گئے نامعلوم افراد  نے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جس سے وہ لہو لہان ہو گئے ،انہیں شدید زخمی حالت میں سروسز ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے ،اسد کھرل نے حملے کا الزام مسلم لیگ ن پر عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان پر حملہ کرنے والے ن لیگی کارکن تھے ،واضح رہے کہ اس سے قبل خاتون صحافی اور سماجی کارکن گل بخاری کو بھی کینیٹ کے علاقے سے نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا تھا جن کے بارے میں ابھی تک کوئی اطلاع نہیں ہے کہ انہیں کس نے اور کیوں اغوا کیا ہے ؟۔

تفصیلات کے مطابق درجن بھر نامعلوم افراد نے ائیرپورٹ کے قریب معروف صحافی اور نجی ٹی وی چینل ’’بول نیوز ‘‘ کے بیورو چیف اسد کھرل کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جس سے ان کا سر پھٹ گیا اور دیگر چوٹیں بھی آئیں ہیں ،نامعلوم حملہ آوروں نے ائیرپورٹ کے قریب گاڑی روک کر اسد کھرل کو باہر نکال لیا اور بدترین تشدد کا نشانہ بنایا ۔اسد کھرل کو شدید زخمی حالت میں سروسز ہسپتال منتقل کر دیا گیا جہاں انہیں طبی امداد دی جا رہی ہے ۔دوسری طرف اسد کھرل نے اپنے اوپر ہونے والے حملے کا الزام مسلم لیگ ن پر عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان پر حملہ کرنے والوں کا تعلق ن لیگ سے تھا ۔واضح رہے کہ اس سے قبل کینٹ کے علاقے سے معروف خاتون صحافی گل بخاری کو بھی نامعلوم افراد نے اغوا کر لیا تھا تاہم ابھی تک اس حوالے سے کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی کہ انہیں کس نے اور کیوں اغوا کیا ہے ۔ 

مزید : قومی