پی کے ایل آئی میں ایک اور کڈنی ٹرانسپلانٹ کامیابی سے انجام پاگیا

پی کے ایل آئی میں ایک اور کڈنی ٹرانسپلانٹ کامیابی سے انجام پاگیا

لاہور(پ ر)پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر میں گذشتہ روز ایک اورکڈنی ٹرانسپلانٹ آپریشن کامیابی سے انجام پاگیا۔یہ آپریشن ہسپتال کے سی ای او اور صدر پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر کی سربراہی میں انجام پایا جو کہ کڈنی ٹرانسپلانٹ کے بین الاقوامی شہرت یافتہ ماہر ہیں۔ جھنگ سے تعلق رکھنے والے 27سالہ مریض جو کہ پیشے کے لحاظ سے ایک کارپینٹر ہے،گردے کی شدید بیماری میں مبتلا تھا۔مریض کی بڑی بہن نے اسے گردے کا عطیہ دیا ۔یاد رہے کہ یہ ٹرانسپلانٹ ہسپتال میں ہونے والا تیسرا کڈنی ٹرانسپلانٹ ہے ۔ اس سے پہلے پی کے ایل آئی میں قلعہ دیدار سنگھ ، گوجرانوالہ کے رہائشی 34سالہ مریض اور لاہور کے علاقے شادباغ سے تعلق رکھنے والے 24سالہ مریض کا کامیاب کڈنی ٹرانسپلانٹ کیا جاچکا ہے۔ ہسپتال انتظامیہ پاکستان میں ہیلتھ کئیر کے معیار کو بہتر بنانے کیلئے کوشاں ہے اورغریب اور مستحق مریضوں کو بلاتفریق تما م تر تشخیصی و معالجاتی سہولیات فراہم کرنے کے مشن کی تکمیل کیلئے پرعزم ہے ۔یہ کامیاب آپریشن ہسپتال کے سٹیٹ آف دی آرٹ ہیلتھ کئیر ادارہ بننے کی طرف ایک بڑا قدم ہے۔پی کے ایل آئی پاکستان کے ان چند سینٹرز میں شمار ہوتا ہے جہاں لیپروسکوپک ڈونر نیفراکٹمی(laparoscopic donor nephrectomies) کی جاتی ہے۔عموماً سینٹرز میں ڈونر کو ایک بڑا کٹ لگا یا جاتا ہے ۔ پی کے ایل آئی میں کڈنی ٹرانسپلانٹ پر دیگر سینٹرز کی نسبت کم اخراجات آئیں گے جبکہ یہاں فراہم کی جانے والی طبی سہولیات کا معیار ایسے دیگر سینٹرز کی نسبت بہت بہتر ہوگا

کیونکہ یہ واحد ادارہ ہے جہاں بین الاقوامی تعلیم یافتہ اور انتہائی تجربہ کار طبی ماہرین ایک ہی چھت تلے موجود ہیں۔ہسپتال غریب اور مستحق مریضوں کو بلاتفریق ٹرانسپلانٹ اور اسکے بعد ضروری ادویات کی ہمہ وقت فر اہمی کویقینی بنائے گا۔

مزید : کامرس