الیکشن 2018، اہلسنت والجماعت جھنگ میں اختلافات

الیکشن 2018، اہلسنت والجماعت جھنگ میں اختلافات

 جھنگ ( نمائندہ خصو صی ) اہلسنت و الجماعت جھنگ میں 25 جولائی 2018 ء کے عام انتخابات کے حوالے سے اختلافات ہوگئے جبکہ جماعت کے بانی سربراہ مولانا حق نواز جھنگوی مرحوم کے صاحبزادے اور یکم دسمبر 2016 ء کے ضمنی انتخاب میں صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی پی 78 موجودہ حلقہ پی پی 126 شہری نشست جھنگ سے الیکشن جیتنے والے جے یو ۱ٓئی کے پارلیمانی لیڈر مولانا مسرور نواز جھنگوی نے مولانا محمد احمد لدھیانوی کے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 115 اور مولانا محمد اعظم طارق مرحوم کے صاحبزادے مولانا معاویہ اعظم طارق کے صوبائی اسمبلی جھنگ کی نشست پی پی 126 پر الیکشن لڑنے کا فیصلہ ماننے سے انکار کرتے ہوئے اپنی صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 126 سمیت قومی اسمبلی کی سیٹ این اے 115پر بھی الیکشن لڑنے کا اعلان کردیا ہے نیز انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ اہلسنت و الجماعت کی سیاسی کمیٹی میں شامل ایک مخصوص قوت کے ۱ٓلہ کار حافظ خالد جھنگوی، ملک منیر احمد،یوسف فاروقی، منیر احمد شاہد کالا پہلوان وغیرہ ان سے پولیس، محکمہ مال، محکمہ تعلیم، محکمہ صحت سمیت مختلف محکمہ جاتی کمیٹیوں کی سربراہی مانگتے تھے تاکہ وہ وہاں سے ناجائز مفادات حاصل کرسکیں مگر ان کے ایسا کرنے سے انکار پر وہ ان کے مخالف ہوگئے اور جماعت میں انتشار ڈالنے کیلئے ان کے خلاف فیصلہ کرواتے ہوئے جھنگ کو ۱ٓؤٹ اور کمالیہ و چیچہ وطنی کو ان کروادیا۔پریس کلب جھنگ میں ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران مولانا مسرور نواز جھنگوی نے کہا کہ ایک مخصوص ہاتھ نے جماعت میں انتشار ڈالنے اور اپنے ناپاک مفادات کی تکمیل کیلئے ایک نجی بینک سے اس ضمن میں 5 کروڑ روپے کی رقم نکلوائی ہے جو جن افراد میں جن مذموم مقاصد کی تکمیل کیلئے تقسیم کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر اہلسنت و الجماعت نے عوامی امنگوں و توقعات کے برعکس کیا گیا فیصلہ واپس نہ لیا تو اپنے سینے میں دفن ایسے ایسے راز افشاء کریں گے کہ جماعت کے نام نہاد ٹھیکیداروں کو منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ اہلسنت و الجماعت مولانا حق نواز جھنگوی مرحوم کی امانت ہے جس پر کسی مفاد پرست کو قبضہ نہیں کرنے دیا جائے گااور اس جماعت کے سلسلہ میں بھی اہم اعلانات و فیصلہ جات جلد کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اگر اہلسنت و الجماعت نے اپنا فیصلہ واپس نہ لیا اور انہیں پی پی 126 سے امیدوار صوبائی اسمبلی نامزد نہ کیا گیا تو وہ دیگر اہم سیاسی جماعتوں کے ساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کریں گے جسے ایک دو روز میں فائنل کرلیا جائے گا۔ مولانا مسرور نواز جھنگوی نے اعلان کیا کہ وہ ایک دو روز میں ایک اور دھماکہ خیز و تفصیلی پریس کانفرنس کریں گے جن میں شرما دینے والے انکشافات اور وائٹ پیپر کو منظر عام پر لایا جا ئے گا تاکہ عوام کو مکروہ چہروں کے بارے میں ۱ٓگاہی حاصل ہوسکے۔

مزید : صفحہ اول