ٹرمپ انتخابی ٹیم کے چیئرمین گواہوں پر اثر انداز ہوئے ،رابرٹ میولر

ٹرمپ انتخابی ٹیم کے چیئرمین گواہوں پر اثر انداز ہوئے ،رابرٹ میولر

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوریوچیف) ڈونلڈ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی ٹیم کے چیئر مین پال منیا فورٹ نے مقدمے کے گواہوں پر اثرانداز ہو نے کی کوشش کی ہے۔ یہ تازہ الزام ایف بی آئی کے تفتیش کار اعلے رابرٹ میولر نے عدالت میں مقدمے کی ایک پیشی کے دوران لگایا ہے و ہ ان پر صدارتی انتخابات میں ٹرمپ کے حق میں روسی ملی بھگت کی فرد جرم پہلے ہی عائد کرچکے ہیں۔رابرٹ میولر نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ مقدمے کے فیصلے سے قبل منیا فورٹ کو رہا کرنے کا فیصلہ واپس لے کر دوبارہ ان کی گرفتاری کا حکم صادر کریں، صدر ٹرمپ مسلسل روسی ملی بھگت سے انکار کرتے چلے آرہے ہیں انہوں نے ایک تازہ بیان میں سوال اٹھایا ہے کہ اگر ان کی صدارتی ٹیم کے سابق چیئر مین نے گواہوں پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی ہے تو ایف بی آئی نے انہیں اس بارے میں کیوں آگاہ نہیں کیا اس کے علاوہ انہیں محکمہ انصاف اور ایف بی آئی نے یہ کیوں نہیں بتایا کہ ایف بی ان کی صدارتی ٹیم کے خلاف خفیہ تفتیش کرنے میں مصروف ہے واشنگٹن کی وفاقی ڈسٹرکٹ خاتون جج ایمی جیکسن نے پال منیا فورٹ کو جمعہ تک ان الزامات کا جواب دینے کی مہلت دی ہے جس کے بعد وہ فیصلہ سنائیں گی کہ انہیں دوبارہ قید یا گھر پر نظر بند کیا جائے گا یا نہیں ؟ خصوصی تفتیش کا ر رابرات میولر کے ساتھ کام کرنے والے استنعاثہ کے ارکان نے عدالت کو بتایا کہ صدارتی مہم کے ساتھ چیئرمین پال منیا فورٹ مسلسل دو گواہوں سے رابطہ رکھے ہوئے تھے اور انہیں جھوٹ بولنے پر مجبور کررہے تھے ۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...