ریحام خان کی کتاب کی تقریب رونمائی کیخلاف حکم امتناعی جاری

ریحام خان کی کتاب کی تقریب رونمائی کیخلاف حکم امتناعی جاری

ملتان (این این آئی)ملتان کی عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی سابقہ اہلیہ اور اینکر پرسن ریحام خان کی تحریر کردہ کتاب کی رونمائی کے خلاف دائر درخواست پر حکم امتناع جاری کردیا۔ملتان کے سول جج نے دائر درخواست پر ریحام خان، حسین حقانی اور پاکستان الیکٹرنک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) سے 9 جون کو جواب طلب کرلیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق درخواست گزار غلام مصطفی نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ کتاب کی اشاعت مبینہ طور پر حقائق کے خلاف ہے۔انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی چیئرمین کی شخصیت کو تباہ کرنے کیلئے کتاب پبلش کی گئی۔درخواست گزار نے دعویٰ کیا کہ عمران خان کے کردار پر کیچڑ اچھال کر الیکشن سبوتاژ کیے جانے کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ کتاب غیرملکی ایجنڈے پر مبنی ہے اور عدالت سے استدعا کی کہ الیکشن کے وقت کتاب کی رونمائی کو روکا جائے۔درخواست گزار کا کہنا تھا کہ سابق سفیر حسین حقانی مسلم لیگ (ن) کی مدد سے کتاب کے ذریعے اداروں کے وقار کو تباہ کرنا چاہتے ہیں۔

حکم امتناعی

دوسرا انٹرو

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف کے ترجمان فواد چودھری نے کتاب کے معاملے پر ریحام خان سے معافی مانگنے اور مواد کی تردید کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ریحام نے ایسا نہ کیا تو ان کے خلاف بھرپور قانونی کارروائی کریں گے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری نے کہا کہ ریحام خان کی کتاب کا مواد واہیات اور گھٹیا ہے، طلاق کو تین برس ہوگئے الیکشن سے دو ماہ قبل کتاب کا شوشا چھوڑا گیا، 1996 میں عمران خان کے خلاف سیتا وائٹ سکینڈل سامنے آیا کیونکہ وہ سیاست میں آرہے تھے جب کہ ماضی میں الیکشن سے پہلے بھٹو مرحوم کی جعلی تصویریں پھیلائی گئیں اور 1987 میں حسین حقانی نے بے نظیر کی جعلی تصاویر بنوائیں۔فواد چوہدری نے کہا کہ امید تھی ریحام اپنی کتاب کے مواد اور جزئیات کی تردید کریں گی لیکن سوال چنا اور جواب گندم کا سلسلہ جاری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ریحام نے خود کہا یہ کتاب ان کے بیٹے اور بیٹی نے ایڈٹ کی، کوئی خاتون اس کتاب میں لکھی باتیں اپنے جوان بیٹے سے ایڈٹ کرانے کا تصور کیسے کرسکتی ہے، ہم فیملی کی اقدار پر یقین رکھنے والے لوگ ہیں، ان کو پاکستان اور فیملی نظام کی کوئی پرواہ نہیں۔ترجمان پی ٹی آئی نے کہا کہ اس ساری اسکیم کے پیچھے رائے ونڈ نظر آرہا ہے، فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ الیکشن کمیشن سے درخواست ہے اس طرح کی کتاب پری پول ریگنگ کے زمرے میں نہیں آتی؟ اس کتاب پر پابندی لگنی چاہیے، سیاسی حریف کو نیچا دکھانے کے لیے یہ کسی بھی حد تک گرسکتے ہیں، ریحام سے کہتا ہوں آخری اپائنمنٹ کا قرض ادا نہ کریں بلکہ فرض ادا کریں۔پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھاکہ ایف آئی اے سائبر ونگ کو اس میں شامل ہونا چاہیے، ای میل کی مکمل تحقیقات کی ضرورت ہے کہ یہ مواد کیسے پھیلایاگیا۔انہوں نے کہا کہ ریحام سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ 24 گھنٹے کے اندر اس مواد کی تردید کریں ورنہ یہ مواد شدید ترین قانونی کارروائی کا متقاضی ہے، اس پر پرچے کٹیں گے اور کرمنل کیسز ہوں گے جب کہ الیکشن کمیشن کو نوٹس لے کر کتاب پر پابندی لگانی چاہیے، اسلامی نظریاتی کونسل بھی اس کا نوٹس لے۔فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ کتاب میں جو بکواس لکھی گئی اس پر ریحام فوری معافی معانگیں، ورنہ ہمارا یہ حق ہے اس پر بھرپور قانونی کارروائی کریں گے۔

فواد چودھری

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک انصاف کے ترجمان فواد چودھری نے کتاب کے معاملے پر ریحام خان سے معافی مانگنے اور مواد کی تردید کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ریحام نے ایسا نہ کیا تو ان کے خلاف بھرپور قانونی کارروائی کریں گے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری نے کہا کہ ریحام خان کی کتاب کا مواد واہیات اور گھٹیا ہے، طلاق کو تین برس ہوگئے الیکشن سے دو ماہ قبل کتاب کا شوشا چھوڑا گیا، 1996 میں عمران خان کے خلاف سیتا وائٹ سکینڈل سامنے آیا کیونکہ وہ سیاست میں آرہے تھے جب کہ ماضی میں الیکشن سے پہلے بھٹو مرحوم کی جعلی تصویریں پھیلائی گئیں اور 1987 میں حسین حقانی نے بے نظیر کی جعلی تصاویر بنوائیں۔فواد چوہدری نے کہا کہ امید تھی ریحام اپنی کتاب کے مواد اور جزئیات کی تردید کریں گی لیکن سوال چنا اور جواب گندم کا سلسلہ جاری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ریحام نے خود کہا یہ کتاب ان کے بیٹے اور بیٹی نے ایڈٹ کی، کوئی خاتون اس کتاب میں لکھی باتیں اپنے جوان بیٹے سے ایڈٹ کرانے کا تصور کیسے کرسکتی ہے، ہم فیملی کی اقدار پر یقین رکھنے والے لوگ ہیں، ان کو پاکستان اور فیملی نظام کی کوئی پرواہ نہیں۔ترجمان پی ٹی آئی نے کہا کہ اس ساری اسکیم کے پیچھے رائے ونڈ نظر آرہا ہے، فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ الیکشن کمیشن سے درخواست ہے اس طرح کی کتاب پری پول ریگنگ کے زمرے میں نہیں آتی؟ اس کتاب پر پابندی لگنی چاہیے، سیاسی حریف کو نیچا دکھانے کے لیے یہ کسی بھی حد تک گرسکتے ہیں، ریحام سے کہتا ہوں آخری اپائنمنٹ کا قرض ادا نہ کریں بلکہ فرض ادا کریں۔پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھاکہ ایف آئی اے سائبر ونگ کو اس میں شامل ہونا چاہیے، ای میل کی مکمل تحقیقات کی ضرورت ہے کہ یہ مواد کیسے پھیلایاگیا۔انہوں نے کہا کہ ریحام سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ 24 گھنٹے کے اندر اس مواد کی تردید کریں ورنہ یہ مواد شدید ترین قانونی کارروائی کا متقاضی ہے، اس پر پرچے کٹیں گے اور کرمنل کیسز ہوں گے جب کہ الیکشن کمیشن کو نوٹس لے کر کتاب پر پابندی لگانی چاہیے، اسلامی نظریاتی کونسل بھی اس کا نوٹس لے۔فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ کتاب میں جو بکواس لکھی گئی اس پر ریحام فوری معافی معانگیں، ورنہ ہمارا یہ حق ہے اس پر بھرپور قانونی کارروائی کریں گے۔

فواد چودھری

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی) سابق وزیر داخلہ احسن اقبال کا کہنا ہے کہ عمران اور ریحام کے آپس کے معاملات ہیں ہمارا کیا لینا دینا اور یہ معاملہ سابق میاں بیوی کا ہے اس میں ہمیں زبردستی شامل کیا جا رہا ہے۔لاہور ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے ریحام خان سے متعلق سوال پر کہا کہ میری ریحام خان سے کبھی ملاقات نہیں ہوئی، ریحام نے مجھ سے پوچھ کر شادی تو نہیں کی تھی، عمران اور ریحام کے آپس کے معاملات ہیں ہمارا کیا لینا دینا ہے، یہ معاملہ سابق میاں بیوی کا ہے، ہمیں زبردستی شامل کیا جا رہا ہے، ہر غیر ضروری بات کا نوٹس لے کر اسے اجاگر کرنے کی ضرورت نہیں، جو بھی مناسب ہوگا کارروائی کریں گے۔احسن اقبال نے کہا کہ عمران خان کی نااہلی، ناقص کارکردگی اور اناڑی پن کے مظاہرے 3 دن میں سامنے آگئے، نگران وزیراعلیٰ کے حوالے سے عمران خان کے یوٹرن ان کی ناہلی اور اناڑی پن کا ثبوت ہیں، عمران ثابت کرچکے کہ ملک کی قیادت کے اہل نہیں ہیں، ان کا اناڑی پن انہیں انتخابات میں شکست دینے کے لیے کافی ہے۔سابق وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ملک کی 3 بڑی جماعتوں کی کارکردگی کے لیے ایک دن کراچی، لاہور اور پشاور میں قیام کرکے دیکھ لیا جائے، ایک دن ان شہروں میں قیام سے پتا چل جائے گا کون سی جماعت ملک کوترقی دینے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ آئی این پی کے مطابق سابق وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اﷲ نے کہا ہے کہ رائے ونڈ مافیا نے کہا تھا کہ ریحام خان عمران سے شادی کریں؟ اگر ریحام خان نے حقائق بتائے ہیں تو یہ ان کا حق ہے‘ نعیم الحق‘ فواد چوہدری اس قسم کی حرکتوں میں ملوث ہیں۔ منگل کو رانا ثناء نے فواد چوہدری کی پریس کانفرنس پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ جب بھی ان کی کوئی منفی بات سامنے لائی جاتی ہے تو اسے مخالفین کی سازش قرار دے دی جاتی ہے رائے ونڈ مافیا نے کہا تھا کہ ریحام خان عمران سے نکاح کریں؟ اگر ریحام خان نے حقائق بتائے ہیں تو یہ ان کا حق ہے۔ خان صاحب کو شرم نہیں آتی کہ وہ بیس پچیس سال کی خاتون کو میسج بھیجتا ہے اس کتاب کو عوام پڑھ کر ہی فیصلہ دیں گے۔ اس کتاب میں لکھاکیا ہے پڑھ کر ہی بتایا جائے گا۔ نعیم الحق‘ فواد چوہدری اس قسم کی حرکتوں میں ملوث ہیں اب ہر شخص ریحام خان کی کتاب کا انتظار کررہا ہے پی ٹی آئی نے خود اپنے پاؤ پر کلہاڑی ماری ہے۔

احسن اقبال/رانا ثنا ء اللہ

مزید : صفحہ اول