امریکہ کی افغان پالیسی دراصل ’’پاکستان دشمن پالیسی‘‘ ہے: حافظ سعید

امریکہ کی افغان پالیسی دراصل ’’پاکستان دشمن پالیسی‘‘ ہے: حافظ سعید

لاہور( ایجوکیشن رپورٹر)امیر جماعۃ الدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ امریکہ کی افغان پالیسی درحقیقت پاکستان دشمنی کی پالیسی ہے۔پاک فوج کی قربانیوں کی وجہ سے انڈیا اپنے منصوبوں میں کامیاب نہیں ہو سکا۔قوم فکری انتشار کا شکار ہے۔اس قوم کو یکسو کرنے کے لئے میڈیا کردار ادا کرے۔کشمیر کی آزادی میں سب سے بڑی رکاوٹ اسلام آباد کی حکومت ہے۔پاکستان دفاعی اعتبار سے مضبوط ملک بن کر کھڑا ہوتا ہے توعالم اسلام کو فائدہ ہو گا۔داعش کو افغانستان میں سازش کے تحت منظم کیا جا رہا ہے۔انڈیا،امریکہ و اسرائیل پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو نشانہ بنانے کی سازشیں کر رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی ہوٹل میں سینئر صحافیوں و کالم نگاروں کے اعزاز میں افطار ڈنر کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرمولانا امیر حمزہ،سیف اللہ خالد،ابوالہاشم ربانی،محمد یعقوب شیخ،یحییٰ مجاہد،تابش قیوم ،احمد ندیم اعوان بھی موجو دتھے۔حافظ محمد سعید نے کہا کہ آج امت مشکلات میں ہے،اللہ کے دشمن صلیبی یہودی ہیں جنہوں نے صلیبی جنگوں کے بعد ا،مت مسلمہ سے سب کچھ چھین لیا اور دنیا پر اپنا نظام مسلط کیا اور مسلمانوں کو غلامی کی زنجیروں میں جکڑ لیا اب انہیں خطرہ محسوس ہو رہا ہے کہ ان کی معیشت کمزور ہو رہی ہے۔مغرب نے جو وسائل پر قبضے کئے تھے،یہ وسائل مسلمانوں کے تھے وہ خطرہ محسوس کر رہے ہیں کہ مسلمان پھر سے بیدرا ہو رہے ہیں اپنے قدموں پر کھڑے ہو رہے ہیں۔وہ سمجھتے ہیں کہ اس سے مغرب سے اقتدار چھین جائے گا اور مسلمانوں کے پاس چلا جائے گا۔اس لئے مسلمانوں کے خلاف خوفناک منصوبہ بندی کی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ پاکستان کو ترقی کرنے سے ہر صورت میں روکا جائے۔پاکستان ایٹمی قوت کیسے بن گیا وہ تلملا رہے ہیں وہ اس کو پاکستان کا ایٹم بم نہیں دیکھتے کہ یہ پاکستان نے اپنے دفاع کے لئے بنایا وہ ہماری اس بات سے مطمئن نہیں۔انہوں نے کہا کہ امریکی صدر کی نئی افغان پالیسی کو ذہن میں رکھنا چاہئے۔وہ کہتے ہیں کہ افغانستان میں امریکہ و نیٹو کے خلاف جو کچھ ہوا اس شکست کا ذمہ دار پاکستان ہے۔حقیقت میں یہ پاکستان دشمنی کی پالیسی ہے۔انہوں نے کہا کہ جو کام انڈیا مشرقی بارڈر پر بیٹھ کر نہیں کر سکتا تھا افغانستان میں بیٹھ کر وہ خطرناک کھیل کھیل رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ داعش امریکہ نے خود پیدا کی ہے۔اسلام،جہاد کو بدنام کر کے داعش کو کھڑا کیا گیا۔ داعش نے عراق اورشام میں بھی مسلمانوں کا خون بہایا ،ایک کاروائی یہودیوں،صلیبیوں کے خلاف ثابت نہیں کر سکتے۔اب وہ وہاں سے فارغ ہو چکے ہیں اسوقت داعش افغانستان میں پہنچا دی گئی۔انہوں نے کہا کہ ہمارا دشمن بہت بڑی تیاریاں ہمارے خلاف کر رہا ہے۔آنکھیں بند کرنے سے خطرات ختم نہیں ہو سکتے۔ہماری حکومتیں اسمبلیوں کا وقت پورا کر لیں تو اسے کامیابی سمجھا جاتا ہے۔غفلتیں انتہا درجے کی ہیں۔حکومتیں غافل ہیں۔ہماری صحافت کو غافل نہیں ہو نا چاہیے۔انہوں نے مزید کہا کہ اب کشمیر میں بھارت ڈیم بنا رہا ہے۔وہ چاہتے ہیں کہ ایٹمی لڑائی سے بچیں اس طرح مجبو کر دیں کہ سارے ہاتھ جوڑ کر کھڑے ہو جائیں۔کشمیر کی تحریک اس سطح پر پہنچ چکی ہے ستر سال میں اس صورتحال تک نہیں پہنچی۔کشمیر کی آزادی میں سب سے بڑی رکاوٹ اسلام آباد کی حکومت ہے۔انہوں نے امریکہ کی غلامی اور انڈیا سے دوستی کرنی ہے۔

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...